وزیراعظم عمران خان نے ایف بی آر بارے کیا اشارہ دیدیا ، بڑی خبر آ گئی

وزیراعظم عمران خان ایف بی آر کی کارکردگی سے خوش نہیں جس کے بعد آج انہوں نے فیڈرل بورڈ آف ریونیو کو ختم کرکے نیا ادارہ تشکیل دینے کا اشارہ دیدیا ہے .

اسلام آباد میں پاکستان فیڈریشن آف چیمبرز آف کامرس اینڈ انڈسٹریز کی تقریب سے خطاب کرتے ہوئے عمران خان نے واضح کیا کہ ’ایف بی آر میں اصلاحات سے ٹیکس نیٹ بہتر ہوگا‘۔ انہوں نے واضح کیا کہ ان کے پاس کوئی بنی بنائی ٹیمیں نہیں ہیں۔

انہوں نے واضح کیا کہ ملک پر قرضہ دس سال میں چھ کھرب سے تیس کھرب تک چلا گیا ۔ اب بھی اگر ٹیکس ریونیو کی ریکوری میں اضافہ نہیں کیا تو پھر ترقی کی منازل طے کرنا مشکل ہو گا . اگر ایف بی آر نے بہتر کارکردگی نہ دکھائی تو پھر نیا ادارہ بنا دیں گے.

وزیراعظم نے تاجربرادری سے مخاطب ہو کر کہا کہ ٹیکس کے بغیر کوئی معاشرہ کامیاب نہیں ہو سکتا تاہم اداروں میں بہتری کے لیے اصلاحات کا عمل جاری ہے‘۔ہ ’مجھے قوم پر مکمل اعتماد ہے تاہم متعین کردہ مقاصد کے حصول میں تھوڑا وقت لگے گا‘۔

عمراں خان نے واضح کیا کہ ’نیک نیتی اور کام کرنے کا جذبہ ہو تو ترقی سے کوئی نہیں روک سکتا اور یہ دونوں چیزیں پاکستان تحریک انصاف کی حکومت میں موجود ہے‘۔ انہوں نے ایک مرتبہ اس عزم کو دہرایا کہ ان کا مقصد پاکستان کو اسلامی فلاحی ریاست بنانا ہے۔

وزیراعظم عمران خان کا کہنا تھا کہ ’ملک میں سرمایہ کاری لانے کی کوشش کررہے ہیں اور اگلے چند برسوں میں متعدد ممالک کی جانب سے سرمایہ کاری آئے گی‘۔ جس سے ملکی معاشی بہتر ہو گی اور ملک میں موجود سرمایہ کاروں کو اپنے کاروبار میں ترقی کرنے کے زیادہ مواقع میسر ہونگے-

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں