پاکستان میں مہنگائی گزشتہ پانچ سالوں کی بلند ترین سطح پر ، عوام کی مشکلات بڑھنے لگیں

دنیا بھر میں مہنگائی پر نظر رکھنے والے ادارے کی جانب سے پاکستان سمیت دیگر ممالک میں مہنگائی کی شرح پر تجزیہ معمول کی بات ہے لیکن اب دی اکانومسٹ کی جانب سے پاکستان میں مہنگائی بارے رپورٹ جاری کی ہے کے مطابق پاکستان میں 2019 کے دوران مہنگائی میں اضافہ ہوا۔

جائزہ رپورٹ کے مطابق جس میں واضح کیا گیا ہے کہ پاکستان میں 2019 کے دوران مہنگائی میں اضافہ ہوا، اور جس کی سب سے بڑی وجہ روپے کی قدر میں کمی رہی ہے جبکہ دوسری طرف مکانات کے کرایوں، پانی و بجلی گیس کے نرخوں میں اضافے نے بھی مہنگائی بڑھانے میں اہم کردار ادا کیا۔

دی اکانومسٹ کی رپورٹ کے مطابق ہاؤسنگ، پانی بجلی گیس کے نرخ میں ہر سال 11.6 فیصد اضافہ ہوا، غذائی اشیاء کی قیمتوں میں 4.5 فیصد اضافہ ہوا، فروری کے مہینے میں افراط زر کی شرح 56 ماہ کی بلند ترین سطح پر پہنچ گئی جب کہ زرعی پیداوار میں کمی بھی کھانے پینے کی اشیاء کی قیمت میں اضافہ کا سبب بنے گی۔

اس صورتحال میں غریب اور متوسط طبقہ مزید پس کررہ گیا ہے ، عوام کی قوت خرید کم ہو چکی ہے جبکہ بیروز گاری میں اضافہ بھی دیکھنے میں آ رہا ہے . پاکستانی حکومت کو مہنگائی پر قابو پانے کی سفارش پر زور دیا گیا ہے

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں