بوم بوم آفریدی نے پاکستانی ٹیم کی سلیکشن کو تنقید کا نشانہ بنا ڈالا ، لیکن کیوں .؟؟؟؟

پاکستان کرکٹ شائقین کے بوم بوم اور سابق کپتان شاہد خان آفریدی نے ایک میچ کی کارکردگی پر سلیکشن پر سخت تنقید کی ہے اور واضح کیا ہے آپ اس طریقے سے پاکستان کی گرین کیپ کو حقیر نہ بنائیں ،

کراچی میں پریس کانفرنس کرتے ہوئے انہوں نے کہا کہ سینئر فاسٹ بائولرز جنید خان اور وہاب ریاض پر آپ نئے لڑکوں کو ترجیح نہیں دے سکتے ، پہلے نئے آنے والے فاسٹ بائولرز کو میچور کریں پھر انہیں پاکستان کیپ سے نوازا جائے-

بوم بوم بلے باز کا کہنا تھا کہ پاکستان سپر لیگ میں ہمیں بیٹسمین نظر نہیں آئے ، جو بولر نظر آئے انہیں بہت جلدی جلدی موقع دے رہے ہیں۔ انہوں نے واضح کیا کہ کپتان سرفراز ٹیم کو زبردست طریقے سے لیڈ کرتے ہیں۔ سب کو پاکستانی کپتان کو سپورٹ کرنا چاہیے ۔ اگر اسی طرح کارکردگی چلتی رہی تو ہم ورلڈ کپ جیتیں گے۔ اگر پاکستان ٹیم بنگلہ دیش یا زمبابوے کے خلاف سیر یز کھیلتی تو سلیکٹرز چھ کھلاڑیوں کو آرام دے سکتے تھے۔ بڑی ٹیم کے خلاف کارکردگی سے کھلاڑیوں میں اعتماد آتا ہے۔ کھلاڑیوں کو آرام دینے کی کوئی ضرورت نہیں تھی

شاہد آفریدی نے پاکستان سپرلیگ کے معیار کو بہترین قراردیا ہے اور کہا ہے کہ پاکستان سپر لیگ کے انعقاد سے پاکستانی کرکٹ ٹیم بہت مضبوط ہو گی-

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں