زرعی یونیورسٹی فیصل آباد کی ملکی سطح پر مقابلوں میں 21 پوزیشنز ، وائس چانسلرڈاکٹر ظفراقبال

فیصل آباد(ویب ڈیسک) زرعی یونیورسٹی فیصل آباد کے نوجوانوں نے ملکی سطح پر بین الجامعاتی لٹریری و کری ایٹویٹی مقابلوں میں پہلی پوزیشن حاصل کر کے 21پوزیشنیں ‘ ایک ٹیم ٹرافی اور چمپئن ٹیم کا اعزاز حاصل کر لیا۔ تفصیلات کے مطابق گورنمنٹ کالج یونیورسٹی فیصل آباد میں ”جہد19“ کے پلیٹ فارم سے منعقد ہونے والے مقابلوں میں ملک بھر سے 51یونیورسٹیوں کے نوجوان شرکت کر رہے تھے۔یونیورسٹی کے طلبہ نے سینئر ٹیوٹر آفس کے توسط سے مختلف مقابلوں میں اپنی صلاحیتوں کا لوہا منواتے ہوئے کامیابیاں سمیٹی ۔ یونیورسٹی کے سینئر ٹیوٹرڈاکٹر اطہر جاوید خاں نے فاتح ٹیم اور وونگ ٹرافی کے ہمراہ وائس چانسلرپروفیسرڈاکٹر ظفر اقبال رندھاوا سے ملاقات کی اور حالیہ کامیابیوں کے حوالے سے تفصیلات بتائیں۔ وائس چانسلرپروفیسرڈاکٹرظفر اقبال رندھاوا نے نوجوان طلبہ اور سینئر ٹیوٹر آفس کی پوری ٹیم کو مبارکباد پیش کرتے ہوئے کہا کہ ہمارے طلبہ ہر شعبہ میں صلاحیتوںکے جوہر دکھا رہے ہیں اور دوسری جامعات میں یونیورسٹی کے سفیر بن کر ہماری نیک نامی کا باعث بن رہے ہیں جو اطمینان بخش امر ہے۔

علاوہ ازیں زرعی یونیورسٹی فیصل آباد میں بین الہاسٹلزسپورٹس گالہ اختتام پذیر ہوگیا۔ ہال وارڈن آفس اور ڈائریکٹوریٹ آف سپورٹس کے اشتراک سے تمام اقامتی ہاسٹلز کے مابین ہونے والے سپورٹس گالہ میں طلبہ نے تمام کھیلوں میں بھرپور شرکت کی اور کامیابیاں اپنے نام کیں۔ سپورٹس گالہ کی اختتامی تقریب ہینڈ بال سٹیڈیم میں منعقد ہوئی جس کے مہمان خصوصی وائس چانسلرپروفیسرڈاکٹر ظفر اقبال رندھاوا تھے۔

فاتح کھلاڑیوں اور ٹیموں میں انعامات تقسیم کرتے ہوئے ڈاکٹر ظفر اقبال رندھاوا نے کہا کہ ماضی کے مقابلہ میں آج کے نوجوانوں اور کھیل کے میدانوں کے درمیان انڈرائیڈموبائلز اور کیبل و کمپیوٹرز حائل ہیں جو ان کی جسمانی صحت کوبری طرح متاثر کر رہے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ دو دہائیاں قبل تک کھیل کے میدان نوجوانوں سے بھرے ہوتے تھے تاہم آج صورتحال اس کے برعکس ہے جو پالیسی سازوں کیلئے یقینا باعث تشویش ہوگی۔ انہوں نے کہا کہ یونیورسٹی میں سپورٹس کی بنیاد پر داخل ہونے والے نوجوانوں کی گراﺅنڈز میں حاضری اور سپورٹس میں شرکت پر گہری نظر رکھی جا رہی ہے اور کھیلوں میں یونیورسٹی کانام روشن کرنے والوں کے نام اور تصاویر کو ہال آف فیم میں نمایاں جگہ دی جائے گی۔ انہوں نے ڈائریکٹوریٹ آف پورٹس کو ہدایت کی کہ کھیلوںمیں کامیابیاں سمیٹنے والے نوجوانوں کی خوراک کی ذمہ داری ڈائریکٹوریٹ آف سپورٹس اپنے ذمہ لے تاکہ دوسرے نوجوانوں میں بھی کھیلوں میں شرکت کا شغف پیدا ہوسکے۔ چیف ہال وارڈن ڈاکٹر محمد امجد اولکھ نے کہا کہ سپورٹس میں شرکت کرنے والے نوجوانوں میں سپورٹس مین سپرٹ دوسرے نوجوانوں کے مقابلے میں زیادہ پائی جاتی ہے اور ان کی کوشش ہوگی کہ زیادہ سے زیادہ نوجوانوں کو گراﺅنڈز میں لاکر کھیلوں میں مشغول رکھا جائے۔ تقریب سے چیئرمین سپورٹس بورڈ ڈاکٹر محمد اشفاق ‘ ناظم امور طلبہ ڈاکٹر شہباز طالب ساہی‘ ڈاکٹر غلام مرتضی سندھو اور ڈاکٹر احمد نواز نے بھی خطاب کیا۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں