فیصل آباد کے ضلعی اور پولیس افسران کھلی کچہریوں سے غائب ، ہو کیا رہا ہے؟؟؟

فیصل آباد(ویب ڈیسک ) وزیراعلی پنجاب سردار عثمان بزدار کی جانب سے ہر جمعہ کو کھلی کچہریاں لگا کر سائلین کے مسائل سننے اور انہیں حل کرنے کے احکامات کو فیصل آباد کے ضلعی اور پولیس افسران نے مکمل نظرانداز کردیا ہے اور کھلی کچہریوں میں اپنے جونیئر افسران کو بھجوانا معمول بن چکا ہے جو کسی سائل کی شکایات سن کر کوئی فیصلہ کر سکتے ہیں نہ ہی کوئی حکم جاری کرنے کا اختیار رکھتے ہیں اس صورتحال سے سائلین کے مسائل کیسے حل ہو سکتے ہیں ایک بڑا سوال لگ گیا ہے –

آج بھی فیصل آباد میں ڈپٹی کمشنر سردار سیف اللہ ڈوگر اور سی پی او اشفاق احمد خان نے سرکٹ ہائوس میں کھلی کچہری لگانا تھی اور اس کے انتظامات بھی مکمل کئے جا چکے ہیں ، کرسیاں لگا دی گئیں تھیں جبکہ افسران کے میزوں پر ان کے عہدوں کے پلیٹس رکھ دی گئیں تھیں لیکن پھر ان کی افسری جاگ گئی اورانہوں نے کھلی کچہریوں میں جانے سے گریز کیا اور اپنے جونیئرز کو ان کھلی کچہریوں کو بھجوا دیا-

میڈیا رپورٹس کے مطابق ڈپٹی کمشنر کی جگہ اے ڈی سی میاں آفتاب جبکہ سی پی او کی جگہ ایس ایس پی آپریشنز نے کھلی کچہریاں لگائیں لیکن ان میں کسی کو سائل کے مسئلہ حل کرنے کے اختیارات نہیں تھے اس صورتحال پر سرکٹ ہائوس کا رخ کرنے والے سائلین نے اپنے تحفظات کا اظہار کیا اور وزیراعلی پنجاب کو اس کا نوٹس لینے کا مطالبہ کیا ہے-

علاوہ ازیں حکومت پنجاب کی ہدایت پرعوامی مسائل سے آگاہی اور ان کے حل کے لئے سرکٹ ہاؤس میں کھلی کچہری لگائی گئی جس میں ایڈیشنل ڈپٹی کمشنر (جنرل) میاں آفتاب احمد اورایس ایس پی آپریشنزاسماعیل الرحمان نے شہریوں کی طرف سے مختلف مسائل پرمبنی شکایات ومسائل سنے۔اسسٹنٹ کمشنرزاورمختلف محکموں کے افسران بھی موجود تھے۔ایڈیشنل ڈپٹی کمشنر (جنرل) اورایس ایس پی آپریشنزنے ناجائز قبضوں،لڑائی جھگڑوں،مقدمات کے عدم اندراج،محکمہ مال کے ریکارڈ میں ردوبدل،صفائی،سیوریج،محکمہ تعلیم وصحت کے بارے میں درخواستوں کا جائزہ لیتے ہوئے سائلان سے کہا کہ ان کے مسائل کے حل کے لئے متعلقہ محکموں کو متحرک کیا گیا ہے اور شکایات کا ازالہ نہ کرنے والے افسران کے خلاف کارروائی بھی کی جائے گی۔انہوں نے بتایا کہ کھلی کچہری میں پیش کی جانے والی شکایات کی درخواستوں پر محکمانہ کارروائی کی باقاعدگی سے مانیٹرنگ بھی جاری ہے تاکہ سائلان کو ریلیف کی فراہمی میں تاخیر نہ ہو۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں