سینٹ کے چیئرمین صادق سنجرانی اہل ہیں یا نااہل ؟؟؟ بڑا فیصلہ کل

پاکستان کے ایوان بالا یعنی سینٹ کے چیئرمین صادق سنجرانی کی قسمت کا فیصلہ کل ہو گا کیونکہ کل اس کیس کا فیصلہ سنایا جائے گا کہ وہ اہل ہیں یا انہیں بھی نااہل قرار دیدیا جائے گا-

سینٹ کے چیئرمین صادق سنجرانی کے اہل یا نا اہل ہونے کا مطلب یہ ہے کہ وہ صدرمملکت کے بیرون ملک دورہ یا ان کی عدم موجودگی میں قائم مقام صدر بننے کے اہل ہیں یا نہیں کا فیصلہ کل سنایا جائے گا ، واضح رہے کہ اسلام آبادہائیکورٹ نے 14 فروری کو فیصلہ محفوظ کیاتھا۔ اسلام آبادہائیکورٹ کے جسٹس عامر فاروق محفوظ فیصلہ سنائیں گے۔

میڈیا رپورٹس کے مطابق اسلام آباد ہائی کورٹ کے رجسٹرار آفس نے آئندہ ہفتے کی کاز لسٹ جاری کردی، جس کے مطابق چیئرمین سینیٹ صادق سنجرانی کی بطورقائم مقام صدراہلیت کا فیصلہ کل پیرکوسنایاجائیگا۔ اسلام آباد ہائی کورٹ کے جسٹس عامرفاروق محفوظ فیصلہ سنائیں گے۔

میڈیا رپورٹس کے مطابق اس کیس میں درخواست گزار کا کہنا تھا صادق سنجرانی کی اس وقت عمر تقریباً 40 سال ہے۔ آئین میں صدر بننے کے لیے عمر 45 سال ضروری ہے۔ صادق سنجرانی نے قائم مقام صدر کا عہدہ سنبھالا تو آئینی بحران پیدا ہوگا۔ صدرمملکت کی عدم موجودگی میں صدر مملکت کی ذمہ داریاں کون نبھائے گا۔ درخواست میں عدالت سے استدعا کی گئی کہ صادق سنجرانی کو قائم مقام صدر کی ذمہ داریاں نبھانے سے روکا جائے۔ آرٹیکل 41 کے تحت چئیرمین سینٹ کا انتخاب دوبارہ کیا جائے۔

اس حوالے سے کل اسلام آباد ہائی کورٹ میں اہم کیس کا فیصلہ سنایا جائے گا جس میں واضح کیا جائے گا کہ سینٹ کے چیئرمین صادق سنجرانی قائم مقام صدر کا عہدہ کا سنبھال سکتے ہیں یا نہیں؟

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں