عامر لیاقت حسین رمضان نشریات کے لائیو پروگرام درمیان میں چھوڑ گئے ، وجہ کیا بنی؟؟

ہرکسی کے ساتھ تنازعہ پیدا کرنے والا آخر کار خود ہی متنازع ہو کررہ جاتا ہے اسی طرح کے ہیں پاکستان تحریک انصاف کے رکن قومی اسمبلی اور ٹی وی اینکر ڈاکٹر عامر لیاقت حسین کیونکہ گزشتہ روز وہ پی ٹی وی پر رمضان نشریات کا براہ راست پروگرام ادھورا چھوڑ کر سیٹ سے چلے گئے تھے جس پر ناظرین نے انہیں سخت تنقید کا نشانہ بنایا –

میڈیا رپورٹس کے مطابق ڈاکٹر عامر لیاقت چوتھے روزے کی افطاری ٹرانسمیشن کے دوران وزیر اعظم عمران خان کی تعریف کی جس کے بعد انہوں نے کہا کہ عامر لیاقت حسین کا سفر یہیں پر اختتام پذیر ہوتا ہے- عامر لیاقت حسین کو اس رمضان ٹرانسمیشن سے اجازت دیجیئے – اس صورتحال کے بعد ایسی افواہیں سامنے آئیں کہ عامر لیاقت کو چینل کے اسٹاف اور مینجمنٹ کے ساتھ نامناسب رویے کے باعث ٹرانسمیشن سے نکال دیا گیا۔

واضح رہے کی ڈاکٹر عامر لیاقت اس سے قبل اپنے ٹوئٹر اکاؤنٹ پر بھی ایسی ٹویٹس کررہے تھے جن سے وہ پریشان نظر آئے تاہم انہوں نے اس دوران اپنی پریشانی کی وجہ نہیں واضح کی – ٹی وی اینکر آج بھی سحری کے دوران ٹرانسمیشن کا حصہ نہیں بنے، جس کے باعث ان کے پی ٹی وی سے نکالے جانے کی افواہوں میں مزید اضافہ ہوگیا- لیکن آج بعد میں انہوں نے ایک نئی ٹویٹ کی جس میں کہا کہ ان کی طبیعت ناساز ہے اس لئے وہ سحری کی نشریات کا حصہ نہیں بن پائے-

ڈاکٹر عامر لیاقت کی رمضان نشریات چھوڑ کر جانے بارے متعدد اطلاعات سامنے آتی رہی ہیں کہ ان کا رویہ پروگرام سٹاف سے بہت نازبیا تھا جس کی وجہ سے وہ خود کو ذمہ دار قرار دے رہے تھے تاہم گزشتہ روز لائیو پروگرام پر سیٹ ہی چھوڑ جانے کے بعد یہ اطلاعات سچ ثابت ہو گئیں-

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں