آئندہ بہت جلد کون کون جیل کے اندر ہونگے؟ نیب چیئرمین جسٹس ر جاوید اقبال نے بتا دیا

ان دنوں نیب اور نیب کے چیئرمین ہر شعبہ میں زیر بحث ہیں اور اس حوالے سے اس وقت نیب کے چیئرمین جسٹس ر جاوید اقبال کے خیالات جاننا ہر شہری کی کوشش ہو گی جسے سینئر کالم نگار جاوید چوہدری نے پورا کر دیا ہے انہوں نے نیب کے چیئرمین سے ملاقات کی ہے اور ان کے سامنے مختلف سوالات رکھے ہیں اور نیب کے چیئرمین نے ان کے کیا جواب دیئے اور اپنی روز مرہ زندگی بارے کیا کیا شیئر کیا جاوید چوہدری نے تفصیل کے ساتھ بیان کیا – ہم اپنے قارئین کے لئے اس کو یہاں پر تحریر کررہے ہیں –

جب نیب کے چیئرمین جسٹس ر جاوید اقبال سے پوچھا گیا آپکو کوئی تھریٹ ہے؟تو جواب دیا بیشمار، ہماری ایجنسیوں نے چند ماہ قبل دو لوگوں کی کال ٹریس کی، ایک بااثر شخص دوسرے سے کہہ رہا تھا جسٹس کو پانچ ارب روپے کی پیشکش کر دو‘ دوسرے نے جواب دیا یہ پیسے لینے کیلئے تیار نہیں ،پہلے نے کہا اسے ڈرا دو، دوسرے نے جواب دیا‘ ہم نے کئی بار ڈرایا‘ اسکی گاڑی کا پیچھا کیا‘ بم مارنے کی دھمکی بھی دی لیکن یہ نہیں ڈر رہا‘ پہلے نے کہا پھر اڑا دو-

اسی طرح ایک اور سوال ک یہ کون لوگ تھے کے جواب میں انہوں نے جواب دیا یہ میں آپکو چند ماہ بعد بتاؤں گا، یہ لینڈ گریبرز اور سیاستدانوں کا مشترکہ منصوبہ تھا- انہوں نے بتایا کہ تین ماہ قبل جب سکیورٹی خدشات کے پیش نظر چیئر مین نیب بحریہ ٹائون میں ذاتی رہائشگاہ سے منسٹرز کالونی کے بنگلہ نمبر انتیس میں شفٹ ہوئے ،ایک روز وہاں انہوں نے چند فائلیں رکھیں اور دورے پر لاہور گئے، انکی عدم موجودگی میں کسی نے گھر کی پچھلی کھڑکی کا جنگلہ توڑا ،اندر داخل ہوا ،تلاشی لی اور فائلیں چوری کرکے غائب ہوگیا-

کالم نگار جاوید چوہدری کے مطابق وفاقی دارالحکومت میں ریڈ زون کے انتہائی حساس ترین علاقے منسٹرز کالونی سے چیئرمین نیب جسٹس(ر) جاوید اقبال کی چوری شدہ فائلوں کا سراغ نہیں مل سکا، پی پی ،ن لیگ مجھے دشمن نمبر ون سمجھتی ہے،قبضہ مافیامیرے خلاف ،ریاستی ادارے ،حکومت بھی نا خوش ، اور مجھے دھمکیاں دی گئیں ، پرویز خٹک، زرداری،حمزہ شہبازجلدجیل میں ہونگے، سیاستدا ن اورقبضہ مافیامجھ پردبائوبڑھارہے ہیں، برداشت کررہاہوں- کالم نگار نے مزید کئی واقعات بیان کئے ہیں جس سے نیب چیئرمین کے خیالات اور احساسات کا پتہ چلتا ہے کہ وہ پاکستان کے لئے کچھ کرنا چاہتے ہیں –

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں