لیبارٹری سکول اینڈ کالج سسٹم میں جدید ڈیجیٹل ٹیکنالوجی متعارف، اس سے آگے کیا؟؟

فیصل آباد (ویب ڈیسک) زرعی یونیورسٹی فیصل آباد کے زیرانتظام لیبارٹری سکول اینڈ کالج سسٹم میں جدید ڈیجیٹل ٹیکنالوجی متعارف کرانے کے علاوہ نئے تعلیمی رجحانات سے طلباوطالبات کو ہم آہنگ کیا جائے گا تاکہ وہ زمانے کی دوڑ میں خود کو مقابلے کے لئے تیار کر سکیں۔ ان باتوں کا اظہار زرعی یونیورسٹی فیصل آباد کے وائس چانسلر پروفیسر ڈاکٹر محمد اشرف نے لیبارٹری سکول اینڈ کالج سسٹم ایگزیکٹو کمیٹی کے اجلاس کی صدارت کرتے ہوئے کیا۔

انہوں نے کہا کہ جامعہ کے اس نظام کے تحت ہر سال طالبات بورڈ میں نمایاں پوزیشن حاصل کرتی ہیں۔ یہی وجہ ہے کہ یونیورسٹی کے اس شعبے کو عوام میں بھرپور پذیرائی میسر آ رہی ہے۔ ڈاکٹر محمد اشرف نے لیبارٹری سکول سسٹم میں جدید رجحانات متعارف کرانے اور اسے مالی لحاظ سے خودکفالت کے حصول کے لئے ہنگامی بنیادوں پر اقدامات بروئے کار لانے کی ضرورت پر زور دیتے ہوئے کہا کہ یہی وہ طریقہ ہے جس کے ذریعے ہم نہ صرف کمیونٹی کی سطح تک جامعہ کا کردار بڑھا سکتے ہیں بلکہ مستقبل کے لئے لیڈر پیدا کر سکتے ہیں۔ ڈاکٹر محمد اشرف نے اساتذہ پر زور دیا کہ وہ اس مقصد کے لئے ایک روڈمیپ تشکیل دیں تاکہ جدتوں کو مستقل بنیادوں پر اپنایا جا سکے۔ ایگزیکٹو کمیٹی کے اجلاس میں یہ بھی طے کیا گیا کہ سکولز کی مجموعی آمدن میں سے 10فیصد رقم اساتذہ کی پنشن کے لئے مختص کی جائے گی جبکہ ان کی ترقی اور مالی طور پر ان کے مفادات کا خصوصی خیال رکھا جائے گا۔ ایگزیکٹو کمیٹی کے اجلاس میں اساتذہ کی خالی آسامیاں پر کرنے کے ساتھ ساتھ ان کی ترقی کے معاملات پر بھی غور کیا گیا۔ پروفیسر ڈاکٹر محمد اشرف نے لیبارٹری سکول اینڈ کالج سسٹم کے مالی نظام کو مضبوطی پر استوار کرنے کے لئے بیرونی آڈٹ کے ساتھ ساتھ ایلومنائی ایسوسی ایشن کے پلیٹ فارم کو متحرک کرنے کی ضرورت پر بھی زور دیا۔ اجلاس میں رجسٹرار چوہدری محمد حسین، ٹریژرر طارق سعید، پرنسپل آفیسر ڈاکٹر حق نواز بھٹی اور سیکرٹری سیف اللہ سیف کے علاوہ تمام سکولز کے سربراہان نے بھی شرکت کی۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں