نفرت انگیزی میں کمی کے لئے یوٹیوب نے نیا قدم اٹھا لیا ، کونسی پابندی لگا دی؟؟؟

یوٹیوب کسی بھی معاملے پر معلومات حاصل کرنے اور اپنی بات دوسروں تک پہنچانے کا خاص چینل ہے جو دنیا بھر میں بے حد مقبول بھی ہے اور کروڑوں لوگ اس سے کمائی کرنے میں بھی مصروف ہیں تاہم اب یوٹیوب انتظامیہ نے ایک نیا اعلان کردیا ہے جو دنیا بھر میں مذہبی ہم آہنگی ، تفکرات سمیت دیگر معاملات میں بہتری لانے کی امید بن سکتا ہے –

میڈیا رپورٹس کے مطابق یو ٹیوب نے نسل پرستی اور تعصب پر مبنی ویڈیوز پر پابندی لگانے کا اعلان کر دیا، اس نئی پالیسی پر عمل درآمد آج سے ہو گا تاہم سسٹم میں مکمل فعالیت میں وقت لگے گا – پالیسی کی خلاف ورزی کرنے والوں کو یو ٹیوب پارٹنر پروگرام سے معطل کیا جائے گا – اس حوالے سے یوٹیوب انتظامیہ نے واضح کیا ہے کہ عمر، جنس، نسل، خاندان، مذہب کی بنیاد پر تعاصب یا تفریق کا کوئی جواز پیش نہیں کیا جا سکتا – واضح رہے کہ ایک ماہ قبل پیرس میں عالمی رہنماؤں نے آن لائن انتہا پسندی کے خاتمے کا مطالبہ کیا تھا۔

یوٹیوب انتظام نے اب واضح کیا ہے کہ نفرت انگیز تقاریر کے خلاف پالیسی سمیت یو ٹیوب ہمیشہ قوانین پر عمل پیرا رہی ہے – نفرت انگیز تقاریر کے خلاف پالیسی میں ایک اور اقدام اٹھا رہے ہیں، اگلے چند ماہ کے دوران بتدریج پابندیوں کا دائرہ کار بڑھایا جائے گا اور مزید وضاحت کرتے ہوئے انہوں نے بتایا کہ اس نئی پابندی کے اطلاق کے بعد نفرت انگیز مواد چلانے والے چینلز یا دیگر monetization features پر اشتہارات نہیں چلائے جا سکیں گے –

واضح رہے کہ یوٹیوب کے استعمال میں پاکستان سمیت دنیا بھر میں کروڑوں افراد پیش پیش ہیں لیکن اب نئے قوانین کے اطلاق کے بعد اب یوٹیوب پر اپ لوڈ کئے جانیوالے مواد کی باریک بینی سے چھان بین کی جائے گی تاکہ کسی قسم کا نفرت انگیز مواد آن ائیر نہ ہوسکے-

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں