عوام پرمزید ٹیکس ، حکومت سگریٹ کی ڈبی اور کولڈ ڈرنکس کی ہر بوتل پر کتنا وصول کریگی؟؟

پاکستان تحریک انصاف کی وفاقی حکومت نے عوام پر مزید بھاری ٹیکس عائد کردئیے جن میں مالی سال 20-2019 کے بجٹ میں سگریٹ اور کولڈ ڈرنکس پر بھاری ٹیکسز شامل ہیں اور انہیں ہیلتھ ٹیکس کا نام دیا گیا جس کی وزیراعظم نے باضابطہ منظوری دیدی ہے اور واضح کیا ہے کہ یہ ہیلتھ ٹیکس تمباکو نوشی کی حوصلہ شکنی کے لئے عائد کئے گئے ہیں –

میڈیا رپورٹس کے مطابق ہرقسم کے سگریٹ کے فی پیکٹ پر 10 روپے جبکہ کاربونیٹڈ ڈرنکس (مشروبات) کی 250 ملی لیٹر بوتل پر ایک روپے ہیلتھ ٹیکس عائد کیا گیا ہے اور اس نئے ٹیکس سے ریکور کی گئی رقم صحت کے شعبے کی ترقی پر خرچ کی جائے گی جبکہ بجٹ میں سگریٹ کی غیرقانونی تجارت کے خلاف اقدامات کی تجویز بھی شامل کی گئیں ہیں جس پر بجٹ اجلاس میں بحث کی جائے گی – سگریٹ اور دیگر مصنوعات کی غیر قانونی پیداوار اور تجارت کی مانیٹرنگ بھی کی جائے گی اور اس سلسلے میں وزارت نیشنل ہیلتھ سروسز اینڈ ریگولیشنز مجوزہ اقدامات کا مسودہ پیش کرے گی۔

وزیراعظم کے ترجمان برائے انسداد تمباکو نوشی بابر بن عطا نے میڈیا کو جاری کئے گئے بیان میں واضح کرتے ہوئے تصدیق کی کہ حکومت کی جانب سے ہیلتھ ٹیکس کی منظور دے دی گئی ہے – انہوںا نے بتایا 20 روپے والے سگریٹ کے پیکٹ پر 10 روپے اور مشروبات پر بھی ہیلتھ ٹیکس عائد کرنے کی منظوری دے دی گئی ہے اورجس کی وصولی مالی سال 2019-20 کے بجٹ کی منظوری کے بعد شروع کر دی جائے گی –

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں