پی ایم اے ماحولیاتی افسران کی غنڈہ گردی اور رشوت ستانی کو نہیں مانتی ، اجلاس میں فیصلہ

فیصل آباد(ویب ڈیسک) پاکستان میڈیکل ایسوسی ایشن کا اجلاس مقامی ہوٹل میں منعقد ہوا جس کی صدارت ڈاکٹر صولت نواز نے کی۔ اجلاس میں ڈاکٹر عبدالستار قریشی، ڈاکٹر محمد عرفان ڈاکٹر رائے عارف ، ڈاکٹر کوکب شکیل، ڈاکٹر فخر بخاری سمیت دیگر ایگزیکٹو ممبران نے شرکت کی۔


اجلاس میں ماحولیات کے انسپکٹر ز اور ڈپٹی ڈائریکٹر کی جانب پرائیویٹ ہسپتالوں کو نوٹس بھیجنے پر سخت رد عمل کا عندیہ دیا۔ اجلاس میں کہا گیا کہ انسپکٹر اور ڈپٹی ڈائریکٹر پرائیویٹ ہسپتالوں کے مالکان سے براہ راست پیسوں کی ڈیمانڈ کرتے ہیں اور جو انکار کرتا ہے اس کے خلاف سخت ایکشن لینے کی دھمکی دی جاتی ہے۔ پی ایم اے اس غنڈہ گردی اور رشوت ستانی کو نہیں مانتی اور پرائیویٹ اسپتالوں کے مالکان سے مل کر احتجاجی لائحہ عمل اعلان کیا جائے گا۔


اجلاس میں وی سی فیصل آباد ڈاکٹر ظفر چوہدری کی طرف سے اپنی پرائیویٹ پریکٹس کو چمکانے کے لئے ڈینٹل سرجری کے وارڈ کو برن سنٹر میں منتقل کرنے کی شدید مزمت کی گئی اور اجلاس میں کہا گیا کہ وی سی کی پرائیویٹ پریکٹس تو نہ چل سکی اور مگر ان کی اس ذاتی غلط پالیسی کی وجہ سے ڈینٹل سرجری کا وارڈ ضرور اجڑ گیا ۔ ایک ایسا ہسپتال جہاں ایک ایک بستر پر تین تین مریض موجود ہیں وہاں اس خالی جگہ کا رہنا سمجھ سے بالا تر ہے۔ اجلاس میں سٹی ڈسٹرکٹ گورنمنٹ کو عطائیت پر قابو پانے میں ناکامی پر شدید تنقید کا نشانہ بنایا گیا ۔ اور اجلاس کے شرکا نے کہا کہ سٹی ڈسٹرکٹ گورنمنٹ اور ہیلتھ کئیر کمیشن عطائیت کے خلاف آپریشن صرف اپنی منتھلی بڑھانے کے لئے کر رہا ہے ۔ اس عطائیت کی وجہ سے فیصل آباد میں ایڈز کے مریضوں کی تعداد ہزاروں میں پہنچ چکی ہے جو کہ ہمارے معاشرے کے لئے ایک المیہ ہے۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں