تنوشری دتہ کے نانا پاٹیکر کیخلاف جنسی ہراسانی کا معاملہ، پولیس نے اب کیا کردیا؟؟؟

بھارتی اداکارہ تنوشری دتہ اور سینئر اداکار نانا پاٹیکر کے مابین جنسی حراسانی کیس کا ڈراپ سین ہو گیا ہے کیونکہ پولیس نے اس کیس کو بند کردیا ہے اور نانا پاٹیکر کو تمام الزامات سے بے قصور قراردیدیا ہے -واضح رہے کہ بھارتی خوبرواداکارہ تنوشری دتہ نے گذشتہ برس ستمبر میں نانا پاٹیکر پر جنسی ہراساں کا الزام لگا یا جس کے بعد بھارت میں جنسی ہراساں کے خلاف ’می ٹو‘ مہم کا آغاز ہوا تھا۔

یاد رہے کہ بھارتی اداکارہ تنوشری دتہ نے ایک ٹی وی انٹرویو کے دوران بتایا تھا کہ 2008 میں فلم ‘ہارن اوکے پلیز’ کی شوٹنگ کے دوران نانا پاٹیکر اور فلم کے عملے نے ان کے ساتھ برا سلوک کیا تھا اور کاسٹ میں شامل سینئراداکار نانا پاٹیکر ان کے ساتھ اسی فلم کے گانے ’نتھنی اتارو‘ میں نازیبا منظر شوٹ کروانا چاہتے تھے – اس دوران سینئراداکار نے ان الزامات کو جھوٹ پر مبنی قرار دیا تھا اور اداکارہ کے خلاف قانونی کارروائی کرتے ہوئے قانونی نوٹس بھی بھجوایا تھا –

بعد میں اکتوبر 2018 میں بھارتی اداکارہ نے ممبئی میں پولیس تھانے جاکر 2008 میں فلم ‘ہارن اوکے پلیز’ کے دوران اپنے ساتھ ہونے والے واقعے کی رپورٹ درج کروائی تھی – جس پر پولیس نے اکتوبر 2018 میں ایک دہائی قبل جنسی طور پر ہراساں کرنے کے واقعے کی باقاعدہ تفتیش کا آغاز کیا تھا اور واقعے کی تحقیقات ایک سال تک رہیں لیکن اب پولیس نے منظم ثبوت نہ ملنے پر نانا پاٹیکر کے خلاف درج کروائے گئے مقدمے کو بند کرتے ہوئے اداکار کو کلین چٹ دے دیتے ہوئے نانا پاٹیکر کے خلاف درج کیا گیا مقدمہ خارج کردیا گیا ہے –

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں