نیب کی ایک اوربڑی کارروائی ، سندھ کی اہم شخصیت گرفتار ، پی پی کا شدید رد عمل

نیب نے سندھ سے ایک اور بڑی گرفتاری عمل میں لائی ہے اور جعلی اکائونٹس کیس میں سابق صدر آصف علی زرداری کی بہن فریال تالپور کو گرفتار کر لیا گیا ہے – واضح رہے کہ چیئرمین نیب جسٹس (ر) جاوید اقبال نے گزشتہ روز جعلی اکاؤنٹس کیس میں فریال تالپور کی گرفتاری کے وارنٹ پر دستخط کیے تھے جس کے بعد ان کی گرفتاری کے وارنٹ گزشتہ رات جاری کیے گئے۔

میڈیا رپورٹس کے مطابق نے رکن سندھ اسمبلی فریال تالپور کو اسلام آباد میں زرداری ہاؤس کے قریب ان کی رہائش گاہ سے گرفتار کیا اور انہیں کل احتساب عدالت میں پیش کیا جائے گا – نیب فریال تالپور کو اپنے دفتر منتقل نہیں کرے گی اور انہیں اسلام آباد میں ہی واقع ان کی رہائش گاہ میں رکھا جائے گا جس کے لیے نیب نے ان کی رہائش گاہ کو سب جیل قرار دے دیا اور اس کا نوٹی فکیشن بھی جاری کردیا گیا ہے اس کے ساتھ ساتھ نیب کی ٹیم نے فریال تالپور کے طبی معائنے کے لیے ڈاکٹر کی ٹیم کو ان کی رہائش گاہ پر طلب کرلیا ہے۔

قومی احتساب بیورو کی جانب سے ایک اعلامیہ جاری کیا گیا ہے جس کے مطابق فریال تالپور تاحکم ثانی اپنے گھر میں قید رہیں گی، ان کی عزت نفس کا پہلے بھی احترام رکھا گیا اور آئندہ بھی مکمل خیال رکھا جائے گا – واضح رہے کہ نیب نے اسپیکر سندھ اسمبلی آغا سراج درانی کو خط کے ذریعے فریال تالپور کی گرفتاری کے بارے میں آگاہ کر دیا جس میں کہا گیا ہے کہ رکن سندھ اسمبلی کو جعلی اکاؤنٹس کیس میں گرفتار کیا گیا ہے۔

واضح رہے کہ نیب کی جانب سے یہ تیسری بڑی گرفتاری ہے جبکہ یہ بھی اطلاعات ہیں کہ سابق وزیراعظم شاہد خاقان عباسی کے وارنٹ گرفتاری جاری کئے جانے کا امکان ہے – فریال تالپور کی گرفتاری پر پیپلزپارٹی کے سخت ردعمل کا اظہار کیا ہے جبکہ مسلم لیگ ن نے بھی فریال تالپور کی گرفتاری کو انتقامی کارروائی قرار دیا ہے –

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں