صحافی کو تھپڑ مارنے کی سزا ، پی ٹی آئی ضلع ملیر کے رہنما کو پارٹی سے فارغ

پاکستان تحریک انصاف کی قیادت نے کراچی میں نجی ٹی وی کے ٹاک شو کے دوران صحافی کو تھپڑ مارنے پر سندھ کے پارٹی رہنما کو نکال باہر کردیا ہے جبکہ انہیں شوکازنوٹس جاری کرتے ہوئے جواب طلبی بھی کر لی ہے –

واضح رہے کہ کراچی میں ایک ٹی وی ٹاک شو کے دوران سابق صدر ملیر ڈسٹرکٹ مسرور سیال اور کراچی پریس کلب کے صدر اور سینئر صحافی امتیاز خان فاران شریک تھے کہ دوران بحث پی ٹی آئی رہنما مشتعل ہو گئے اور صحافی سے لڑائی جھگڑا شروع کر دیا اور انہیں تھپڑ مار دیا جس پر صحافتی تنظیموں نے شدید رد عمل کا اظہار کیا اور اس واقعے کی شدید مذمت کی تھی جس پر پاکستان تحریک انصاف کی قیادت نے نوٹس لے لیا ہے –

میڈیا رپورٹس کے مطابق معاون خصوصی برائے اطلاعات فردوس عاشق اعوان نے پاکستان تحریک انصاف کے صوبائی رہنما کی جانب سے صحافی کو تھپڑ مارے جانے کے واقعے کی مذمت کرتے ہوئے کہا گیا تھا کہ صحافی کو تھپڑ مارنے کے واقعے سے ہمارے سر شرم سے جھک گئے ہیں۔صحافی سے بدسلوکی پر پاکستان تحریکِ انصاف نے اپنے رہنما کے خلاف کارروائی کرتے ہوئے سابق صدر ملیر ڈسٹرکٹ مسرور علی سیال کی بنیادی پارٹی رکنیت معطل کر دی ہے۔

پارٹی قیادت کی جانب سے جاری کردہ اعلامیے کے مطابق مرکزی سیکریٹری جنرل ارشد داد کی جانب سے باضابطہ شوکاز نوٹس جاری کیا گیا ہے جس میں مسرور علی سیال سے 14 روز کے اندر جواب طلب کیا گیا ہے۔اعلامیے میں مزید کہا گیا ہے کہ معاملہ مزید کارروائی کے لیے قائمہ کمیٹی برائے نظم و احتساب کو بھجوا دیا گیا ہے۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں