پاکستان اور یو اے ای سرمایہ کاری اور اقتصادی تعلقات کو فروغ دینے کیلئے پرعزم ، اماراتی سفیر

فیصل آباد (ویب ڈیسک) پاکستان اور متحدہ عرب امارات کے آئندہ مشترکہ وزارتی کمیشن کے اجلاس میں دونوں ملکوں کے درمیان سرمایہ کاری اور اقتصادی تعلقات کیلئے لیگل فریم ورک کو حتمی شکل دی جائے گی۔ یہ بات متحدہ عرب امارات کے سفیر حماد عبید ابراہیم سالم الزابی نے پاکستان ہوزری مینوفیکچررز اینڈ ایکسپورٹرز ایسوسی ایشن میں فیصل آباد کے برآمدکنندگان سے خطاب کرتے ہوئے کہی ۔ انہوں نے دونوں برادراسلامی ملکوں کے درمیان خوشگوار تعلقات پر اطمینان کا اظہار کیا اور کہا کہ متحدہ عرب امارات میں کام کرنے والے بہت سے لوگوں میں پاکستانیوں کی تعداد 1.7ملین ہے۔ انہوں نے پاکستان میں عمران خان کی نئی حکومت سے بھی خوشگوار تعلقات کا ذکر کیا اور بتایا کہ دونون ملکوں کی حکومتی پالیسیوں میں مکمل یکسانیت ہے۔ انہوں نے پاکستان کے استحکام کو اس پورے خطے کے امن کیلئے ناگزیر قرار دیتے ہوا کہاکہ پاکستان میں امن وامان کے علاوہ سرمایہ کاری کیلئے قابل اعتماد لیگل فریم ورک کی ضرورت ہے۔ اور اس سلسلہ میں جولائی یا اگست میں دونوں ملکوں کے مشترکہ وزارتی کمیشن کا اجلاس ابو ظہبی میں ہوگا جس کی صدارت پاکستان کے وزیر خارجہ شاہ محمود قریشی کریں گے۔

اس اجلاس میں دیگر معاملات کے علاوہ دونوں ملکوں کے درمیان مفاہمتی یادداشتوں پر دستخط اور نئے منصوبے شروع کرنے پر بھی غور ہوگا۔ انہوں نے بتایا کہ متحدہ عرب امارات کے تجارتی وفد پاکستان کا دورہ کرتے رہتے ہیں لیکن اسلام آباد، کراچی اور لاہور تک محدود رہتے ہیں۔ تاہم ان کی کوشش ہوگی کہ آئندہ ان وفود کو فیصل آباد بھی لایا جائے تاکہ فیصل آباد کے صنعتی، تجارتی اور کاروباری پوٹینشل کو سمجھ سکے اور اس سے فائدہ اُٹھا سکے۔ انہوں نے بتایا کہ پاکستان میں امن وامان کی صورتحال بہت بہتر ہوئی ہے جن سے معیشت کو درپیش چیلنجوں پر قابو پانے میں مدد ملے گی۔ فیصل آباد کے3روزہ دورہ کے بارے میں انہوں بتایا کہ اس کا اصل مقصد فیصل آباد کے پوٹینشل کو سمجھنا اور اس سے فائدہ اٹھانے کیلئے متحدہ عرب امارات کے سرمایاکاروں کے مقامی برآمدکنندگان سے براہ راست رابطوں کو فروغ دینا ہے ۔انہوں نے کہا کہ فیصل آباد کا دورہ دونوں ممالک کیلئے مثبت ثابت ہوگا۔ ایک سوال کے جواب میں حماد عبید ابراہیم نے بتایا کہ ستمبر تک اسلام آباد، کراچی اور لاہور میں متحدہ عرب امارات کے ویزہ سنٹر کھول دئیے جائیں گے۔ انہوں نے بتایا کہ اس سلسلہ میں ویزا جاری کرنے کیلئے نئی حکمت عملی وضع کی جارہی ہے اور وہ بہت جلد اس سلسلہ میں ہونے والی پیش رفت کے بارے میں پی ایچ ایم اے کو آگاہ کریں گے۔ متحدہ عرب امارات کی دیگر ریاستوں سے بھی براہ راست پروازیں شروع کرنے کے بارے میں ایک سوال کے جواب میں انہوں نے بتایا کہ یہ مسئلہ بہت جلد حل کر دیا جائے گا جبکہ فیصل آباد سے بھی مزید پروازیں شروع کرنے کی گنجائش موجود ہے۔ انہوں نے پاکستان سے تازہ گوشت،سبزیوں اور پھلوں کی برآمد کے حوالے سے بتایا کہ اس سلسلے میں دونوں ملکوں کے درمیان ،معاہدہ ہوچکا ہے۔جس میں برآمد کی جانے والی اشیاء کے معیار کا تعین کیا گیا ہے اور اس معاہدے کے مطابق ہی طریقہ کار پر عمل ہورہا ہے۔

اس سے قبل خطبہ استقبالیہ پیش کرتے ہوئے پاکستان ہوزری مینوفیکچررز اینڈ ایکسپورٹرز ایسوسی ایشن نارتھ زون کے سینئر وائس چیئرمین میاں کاشف ضیاء نے اپنی ایسوسی ایشن کا مختصر تعارف کرایا اور بتایا کہ پی ایچ ایم اے بُنے ہوئے کپڑے کی تیاری اور برآمد کی سب سے بڑی اور منتخب تنظیم ہے۔ پاکستان بھر میں اس کی ممبر کمپنیوں کی تعداد 1600 سے زائد ہے اور اس ایسوسی ایشن کو ملک میں سب سے زیادہ روزگار کے مواقعے فراہم کرنے کا بھی اعزاز حاصل ہے۔ انہوں نے بتایا کہ پی ایچ ایم اے کے ممبر سالانہ 3.2 ارب ڈالر کا زرمبادلہ کماتے ہیں جبکہ ایسوسی ایشن کے دفاتر فیصل آباد کے علاوہ کراچی، لاہور اور سیالکوٹ میں بھی ہیں۔بعد ازتعارف انہوں نے شہر کے اہم صنعتی ، تجارتی، کاروباری اور تعلیمی اداروں کا ذکر کرتے ہوئے بتایا کہ ٹیکسٹائل مصنوعات کی 45فیصد پیداوار فیصل آباد میں ہورہی ہے۔ متحدہ عرب امارات کے درمیان تجارتی عدم توازن کے حوالے سے انہوں نے بتایا کے متحدہ عرب امارات کی برآمدات 8.67 ارب جبکہ درآمدات صرف1.96ارب ڈالر ہے، پاکستان زرعی ملک ہے جہاں سے کھانے پینے کی تازہ اشیاء فوری طور پر برآمد کی جاسکتی ہے۔

صدر فیصل آباد چیمبر آف کامرس اینڈ انڈسٹری سید ضیاء علمدار حسین نے کہاکہ جس طرح لاہور میں مرحوم شیخ زید بن النہیان کے نام سے ہسپتال بنایا گیا ہے۔ ہم چاہتے ہیں ویسا ایک ہسپتال فیصل آباد میں بھی تعمیر کیا جائے تاکہ یہاں کے لوگوں کو بھی صحت کی بہتر سہولیات میسر ہو سکیں۔ انہوں نے کہا کے ہم چاہتے ہیں کہ مسائل کے فوری حل کیلئے B2Bمیٹنگز کاسلسلہ بھی شروع کیا جائے اور اس سلسلے میں فوڈ پراسیسنگ کے علاوہ ٹیکسٹائل سیکٹر ،تعلیم،صحت،آرٹس، ہاٹلنگ اور دیگر شعبوں پر بھی کام کرنے کی ضرورت ہے ۔

محمد شاھین تبسم سابق وائس چیئرمین پی ایچ ایم اے(نارتھ زون) نے معزز مہمان کو لوکل ہوزری گارمنٹس کے بارے میں مکمل بریفننگ دی کہ فیصل آباد میں جراب،بنیان کے علاوہ اعلیٰ کوالٹی کی ٹائٹس،لیگنگ ، پلازو، کیپری اور دیگر مصنوعات تیار کی جاتی ہیں۔اس موقع پر حاجی سلیم، حافظ اکبر،عمران لطیف، عمررحمان و دیگر ممبران نے بھی شرکت کی۔ آخر میں سید ضیاء علمدار حسین نے معزز مہمان کو اعزازی شیلڈ پیش کی ۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں