پنجاب کے مختلف اضلاع کے دینی مدارس میں کتنے غیر ملکی طلبا موجود ، بڑا انکشاف

پنجاب کے مختلف اضلاع میں قائم مدارس میں 286 غیر ملکی طلبا ویزے کی مدت ختم ہونے کے باوجود قیام پذیر ہونے کا انکشاف ہوا ہے اس حوالے سے رپورٹ صوبائی وزارت داخلہ کو بھجوا دی گئی ہے – واضح رہے کہ ان طلبا میں بھارت ، سری لنکا سمیت دیگر ممالک کی شہریت کے حامل طلبا شامل ہیں –

صوبائی وزارت داخلہ کے زیر انتظام سپیشل برانچ کی رپورٹ کے مطابق پنجاب کے مختلف اضلاع میں چلنے والے دینی مدارس میں 302 غیر ملکی قیام پذیر اور زیر تعلیم ہیں اور ان میں سے 286 غیر ملکی طلبا ایسے ہیں جن کے ویزے ختم ہو چکے ہیں اور اب وہ غیر قانونی طورپر پاکستان میں مقیم ہیں جس پر ایک سوالیہ نشان لگ گیا ہے – رپورٹس کے مطابق بھارت، چین، چاڈ، سری لنکا، ایتھوپیا، الجزائر، یوگانڈا، کوموروس، اردن، سینیگال، لیبیریا اور میانمار سمیت 26 ممالک سے 302 طالب علم پنجاب میں موجود ہیں جن کے ویزا کی معلومات سے متعلق انکشاف اسپیشل برانچ کے فیلڈ اسٹاف کی چیکینگ کے دوران ہوا۔

رپورٹس کے مطابق ان تمام غیر ملکی طالب علموں میں سے 20 صرف راولپنڈی میں قیام پذیر ہیں، جن میں 12 تھائی لینڈ، 2 ملائیشیا، 2 چین، ایک قازقستان اور ایک فلپائن کے رہائشی ہیں اسی طرح اس کے علاوہ 9 غیر ملکی طالب علم ضلع گوجرانوالہ میں موجود ہیں جن میں سے 4 کے پاس ویزا ہے جبکہ اٹک میں 5 مدرسوں میں تمام غیر ملکی طالب علموں کے پاس ویزا نہیں ہے اس کے ساتھ ساتھ زائد المیعاد ویزا والے طالب علموں میں 70 تھائی لینڈ، 55 فلپائن، 31 انڈونیشیا، 20 ملائیشیا، 20 سوڈان، 20 چین، 14 قازقستان، 14 چاڈ اور 11 الجزائر کے رہائشی ہیں جبکہ 3 بھارتی شہری بھی زائدالمیعاد ویزا کے ساتھ لاہور میں تعلیم حاصل کر رہے ہیں۔

اس حوالے سے اسپیشل برانچ نے تمام مدرسوں سے غیر ملکی طالب علموں کے دستاویزات وزارت داخلہ بھیجنے کی ہدایت کی تاکہ ان کے ویزا میں توسیع دی جاسکے جبکہ اس حوالے سے ضلعی پولیس نے مدرسوں کے انتظامیہ سے غیر ملکی طالب علموں کی سیکیورٹی اور ان کی نقل و حرکت پر نظر رکھنے کے لیے تعاون کی ہدایت کی ہے۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں