مسلم لیگ ن پنجاب کے صدر راناثنا اللہ کی اہلیہ نے انصاف کیلئے کس سے رجوع کرلیا؟؟

پاکستان مسلم لیگ ن پنجاب کے صدر اور رکن قومی اسمبلی رانا ثنا اللہ خاں کی مبینہ منشیات کے ساتھ گرفتاری کے بعد ان کی اہلیہ و دیگر اہلخانہ نے حکومت پر عدم اعتماد کا اظہار کیا ہے اور اب ان کی اہلیہ نے اقوام متحدہ سے رجوع کر لیا ہے جس کے تحت نبیلہ ثناء اللہ نے اپنے وکلا کی مشاورت سے اقوام متحدہ کے ڈرگ اینڈ کرائم آفس کو خط بھجوا یا ہے جس میں کہا گیا ہے کہ میرے خاوند کو سیاسی انتقام کا نشانہ بنایا جا رہا ہے، اقوام متحدہ کا ڈرگ اینڈ کرائم سیل اس پر کمیشن بنائے اور اس مشکوک واقعے کی تحقیقات کرے۔

میڈیا رپورٹس کے مطابق دو صفحوں پر مشتمل خط میں کہا گیا ہے کہ رانا ثناء اللہ کی گاڑی میں موجود چار موبائلز، آئی پیڈ، پرس اور ساٹھ ہزار روپے تھے وہ بھی ہمیں نہیں دئیے گئے جب کہ رانا ثناءاللہ پہلے ہی کہہ چُکے تھے کہ اُن کا قتل یا گرفتار کر کیا جائے گا ، خط کے متن کے مطابق ریاست نے رانا ثناء اللہ کی گرفتاری کر کے ایک اچھی ساکھ کے ادارےاے این ایف کی بدنامی کی ، وزیر اعظم عمران خان نے ذاتی اختلاف پر انھیں گرفتار کروایا ، ہمیں موجودہ حکومتی اداروں سے انصاف کی توقع نہیں ہے اس لیے اقوام متحدہ کا ڈرگ اینڈ کرائم سیل اس پر کمیشن بنائے اور اس مشکوک واقعے کی تحقیقات کرے۔

یاد رہے کہ یکم جولائی کی رات اینٹی نارکوٹکس فورس کی جانب سے موٹر وے پر سکھیکی کے قریب منشیات رکھنے کے الزام میں گرفتار کیا تھا اور وہ آج کل 14 روزہ جوڈیشل ریمانڈ پر جیل میں ہیں –

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں