اڈیالہ جیل میں نیب ریفرنس کا ملزم ہلاک ، کون تھا اور ہلاکت کی وجہ کیا بنی؟؟ تشویشناک خبر

نیب ریفرنس میں ملزم ایک قیدی جو کہ اڈیالہ جیل میں قید تھا اس کی ہلاکت کا انکشاف ہوا ہے جس کی ذمہ داری جیل حکام پر ڈالی جارہی ہیں ، واضح رہے کہ یہ معاملہ اس وقت سامنے آیا جب جیل ہسپتال کے ایک میڈیکل آفیسر نے ڈی آئی جی جیل خانہ جات اور سپرنٹنڈنٹ جیل کو خط لکھا جس میں واضح کیا گیا کہ قیدی محمد علی قریشی کی جان بچانے کیلئے آکسیجن کی ضرورت تھی لیکن آکسیجن والے سلنڈر خالی نکلے –

میڈیا رپورٹس کے مطابق لکھے گئے خط میں مزید یہ بھی کہا گیا ہے کہ اڈیالہ جیل میں قیدیوں کی زندگی داﺅ پر لگ گئی ہے، نیب ریفرنس کے ملزم قیدی شیخ محمدعلی قریشی کی موت جیل انتظامیہ کی غفلت سے ہوئی ہے، ڈاکٹر نے خط میں لکھا کہ 6 جون کو نیب ریفرنس کے قیدی شیخ محمد علی کی اچانک حالت خراب ہوئی،مریض کو بچانے کے لیے آکسجن کی ضرورت تھی لیکن سلنڈر خالی تھے۔ڈاکٹر نے لکھا کہ بروقت آکسیجن مہیا نہ ہونے سے مریض کے دماغ کے سیل مردہ ہوگئے،مریض کومے میں چلا گیا اورزندگی کی بازی ہار گیا –

اڈیالہ جیل حکام کی جانب سے ابھی تک اس حوالے سے کوئی موقف سامنے نہیں آیا لیکن اس معاملہ کو میڈیا میں رپورٹ کیا جارہا ہے-

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں