صادق آباد میں ٹرین حادثہ ، وفاقی وزیر ریلوے شیخ رشید کا استعفی “ٹاپ ٹرینڈ” بن گیا

آج صبح صادق آباد میں ٹرینوں کے حادثہ میں 11 قیمتی جانوں کے نقصان اور 67 سے زائد خمیوں کے بعد عوام میں غم و غصہ کی لہر دوڑ گئی ہے اور پاکستان تحریک انصاف کی حکومت اور وزیر ریلوے کی اب تک مدت میں 79 ٹرین حادثات کے بعد نہ صرف سیاسی جماعتوں بلکہ سوشل میڈیا پر بھی وزیر ریلوے شیخ رشید سے استعفے کا مطالبہ زور پکڑ گیا ہے – اس حوالے سے اپوزیشن جماعتوں کے رہنما بھی میدان میں ہیں – چیئرمین پیپلزپارٹی بلاول بھٹو زرداری نے ٹرین حادثے پر شیخ رشید سے مستعفی ہونے کا مطالبہ کرتے ہوئے کہا ہے کہ ٹرین حادثوں پر وزیر کے مستعفی ہونے کی مثالیں دینے والے عمران خان اپنے وزیر سے استعفی مانگیں گے، ڈکٹیٹر مشرف کے دور میں بھی شیخ رشید نے ریلوے کا محکمہ تباہ کیا جس کا خمیازہ جمہوری حکومتوں کو بھگتنا پڑا جب کہ عمران خان نے بڑے فخر سے شیخ رشید کو ریلوے کی وزارت دی اور آج خان صاحب کا یہ فیصلہ بھی غلط نکلا۔

پاکستان مسلم لیگ ن کے صدراور اپوزیشن لیڈر شہباز شریف نے ٹرین حادثے میں 12 قیمتی انسانی جانوں کے نقصان اور 67 سے زائد کے زخمی ہونے پر رنج و غم اور افسوس کا اظہارکرتے ہوئے کہا کہ ٹرینوں کے پے درپے حادثات انتہائی تشویشناک ہیں، کمزور ریلوے ٹریک اور ناقص منصوبہ بندی حادثات کا باعث بن رہے ہیں، حادثے کے ذمہ داران کا تعین کرکے ان کے خلاف کارروائی کی جائے – اسی طرح مشیر اطلاعات سندھ مرتضیٰ وہاب نے کہا کہ شیخ رشید کی انتظامی نااہلی ریلوے حادثات کی نظر میں سامنے آرہی ہے، شیخ رشید سیاست چمکانے کے بجائے ریلوے کے نظام پر توجہ دیں، رحیم یار خان میں ٹرین حادثہ ریلوے انتظامیہ کی غفلت کا نتیجہ ہے – اس ساتھ ساتھ مسلم لیگ ن کے رہنما اور سابق وزیر مملکت برائے داخلہ امور طلال چوہدری نے بھی ٹرین حادثے پر وزیر ریلوے شیخ رشید کے استعفے کا مطالبہ کرتے ہوئے کہا کہ خوشامدی نیازی ایکسپریس چلانے سے پہلے عوام کی جان کی حفاظت کو یقینی بنانے کا انتظام کیا جائے، ‎عمران نیازی شیدے ٹلی کو وزارت گالم گلوچ دے دیں، ریلوے کسی اور وزیر کودیں۔

واضح رہے کہ سماجی رابطے کی سائٹ ٹوئٹر پر بھی ٹرین حادثے کے بعد ’شیخ رشید استعفیٰ دو‘ کا ٹرینڈ ٹاپ پر ہے جس میں صارفین کی جانب سے وزیر ریلوے شیخ رشید سے استعفیٰ دینے کا مطالبہ کیا جارہا ہے جبکہ ابھی تک شیخ رشید یا حکومتی عہدیداروں کی جانب سے اس حوالے سے کوئی رد عمل سامنے نہیں آیا –

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں