تاجر تنظیمیں متحد ، ملک بھر میں اگست کے دوران 2 دن کی 2 مرتبہ شٹر ڈائون ہڑتال کا اعلان

فیصل آباد ، لاہور سمیت ملک بھر میں تمام تاجر تنظیموں نے اگست کے دوران 4 دن مکمل شٹر ڈاون ہڑتال کا اعلان کردیا ہے ، تمام تاجر تنظیموں کے متفقہ اور مشترکہ اعلان کے مطابق مورخہ 15 ، 16 اگست 2019 ( دو دن ) مورخہ 26 ، 27 اگست 2019 ( دو دن مزید) ملک بھر میں مکمل شٹرڈاون ہڑتال ھوگی ۔۔۔!!

اس حوالے سے مرکزی سیکرٹری جنرل آل پاکستان انجمن تاجران نعیم میر کا کہنا تھا کہ ریٹیلرز کی مشاورت سے فکسڈ ٹیکس سکیم کا اجراء کیا جائے ، جب تک فکسڈ ٹیکس سکیم کا اجراء نہیں ھوجاتا ھمارا احتجاج جاری رھے گا ، حکومت کی من پسند فکسڈ ٹیکس سکیم قبول نہیں ، اسی طرح مطالبات نہ مانے گئے تو عاشورہ کے بعد غیر معینہ مدت کے لئے دکانیں بند کردیں گے –

اس کے علاوہ آج فیصل آباد میں بھی تاجر تنظیموں کے دونوں بڑے دھڑے انجمن تاجران سٹی اور انجمن تاجران سپریم کونسل بھی متحد ہو گئے اور خواجہ شاہد رزاق سکا ، حاجی اسلم بھلی ، محمود علی جٹ ، عباس حیدر شیخ و دیگر نے مشترکہ پریس کانفرنس کی جس میں واضح کیا گیا کہ وہ سمجھتے ہیں کہ قرضوں کے بھاری حجم ، سود کی قسطوں کی ادائیگی ، آمدن و اخراجات میں عدم توازن ، سیاسی و معاشی عدم استحکام ، مسلسل کساد بازاری ، ڈالر کی اڑان ،اسٹیک ہولڈرز کی مشاورت کے بغیر آئی ایم ایف کی ہدایت پر بجٹ کی تیاری ، پیچیدہ اور مشکل نظام کے ذریعے ہر سطح پر بھاری بھرکم ٹیکسز کے نفاذ ، پیداواری لاگت میں اضافے نے ملکی صنعتوں کے سستی سے چلتے پہیے کو بند اور مارکیٹوں کو ویران و سنسان کردیا ہے –

انہوں نے کہا کہ ان حالات میں بہتری کے لئے ہم نے 32 نکاتی چارٹر آف ڈیمانڈ حکومت کے حوالے کیا مگر معیشت و حالات میں بہتری کی ہماری کوششوں کی شنوائی نہ ہونے پر 13 جولائی کو ہم نے ملک گیر شٹرڈائون ہڑتال میں شرکت کی ، کراچی سے خیبر تک ہرطرح کی حکومتی کوششوں کے باوجود تاریخ سازشٹرڈائون ہڑتال کے ذریعے تاجر طبقہ نے حکومتی ، معاشی پالیسیوں پر عدم اعتماد کا اظہار کیا مگر حکومت کے اندھے، بہرے گونگے پن و طاقت کے گھمنڈ ، فکس ٹیکس نظام لانے کے صرف زبانی جمع خرچ ہوئے ، چھوٹے تاجروں کے لئے کھاتے ، حساب کتاب رکھنے اور سیلز ٹیکس رجسٹریشن ، خریدو فروخت پر شناختی کارڈ کے اندراج کی شرط کے خاتمے ، آسان ٹیکس نظام جیسے جائزمطالبات تسلیم نہ کئے جانے پر فیصلہ کیا ہے کہ ملک بھر کے تاجر خرید و فروخت پر شناختی کارڈ نہیں دیں گے-

تاجر راہنمائوں نے واضح کیا کہ ایف بی آر کی ٹیموں کے مارکیٹوں میں آنے پر ان کا گھیرائو کریں گے ، بجٹ کے تمام متنازعہ امور کے خلاف 15 اور 16 اگست جبکہ پھر بعد میں 26 اور 27 اگست کو مشترکہ فیصلہ کے تحت ملک گیر شٹرڈائون ہڑتال کی جائے گی –

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں