کشمیریوں پر ظلم و ستم ، بھارتی اداکارہ ارمیلا بھی پھٹ پڑیں ، مودی سرکار پرشدید تنقید

کشمیر میں کرفیو اور عوام پر ظلم و جبر کی خلاف بھارت کے اندر سے بھی آوازیں اٹھنا شروع ہو چکی ہے – اس حوالے سے فلم انڈسٹری کی معروف اداکارہ اور کانگرےیس کی رکن ارمیلا مٹونڈکر نے شدید مذمت کا اظہار کرتے ہوئے کہا ہے کہ مقبوضہ کشمیر میں مسلسل 26 روز سے لاک ڈاؤن کے باعث عوام گھروں میں محصور اور حریت قیادت قید ہے، جگہ جگہ بھارتی فورسز کے ناکوں کے باعث مریضوں کو ادویات اور اسپتال جانے کی بھی اجازت نہیں ہے – اس کے علاوہ بھارتی فورسز اپنے حقوق کے لیے آواز بلند کرنے والے نہتے کشمیریوں پر پیلٹ گنوں اور آنسو گیس کا بے دریغ استعمال بھی کررہی ہیں –

اداکارہ نے مقبوضہ کشمیر میں مودی حکومت کی جارحیت پر شدید تنقید کرتے ہوئے کہا کہ ان کا کشمیر میں موجود ساس سسر سے کوئی رابطہ نہیں ہو رہا – 22 دن گرز چکے میرے شوہر کی اپنے والدین سے بات نہیں ہو سکی اور نہ ہی میری ان سے بات ہوسکی ہے – انہوں نے مقبوضہ کشمیر کی کشیدہ صورتحال پر تشویش کا اظہار کرتے ہوئے کہا کہ پتا نہیں کہ مقبوضہ کشمیرمیں میری ساس اور سُسر کے پاس دوائیاں ہیں یا نہیں، دونوں ہی بلڈ پریشر کےمریض ہیں –

اس صورتحال کے بعد فلم انڈسٹری کے دیگر افراد بھی بھارتی حکومت پر تنقید کررہے ہیں –

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں