کیا پی آئی اے کے 250 ارب کے خسارے کی وجہ یہی میزبان ہیں؟؟ صارفین کا سوال

2 روز قبل پی آئی اے کی فضائی میزبانوں کی جانب سے ایک ٹک ٹاک ویڈیو شیئر کی گئی جسے شائقین میں خوب پذیرائی مل رہی ہے جبکہ دوسری طرف پی آئی اے انتظامیہ نے دونوں ائیرہوسٹس کو شوکاز نوٹسز جاری کردئیے ہیں لیکن صارفین کی ایک بڑی تعداد فضائی میزبانوں کی حمایت میں سامنے آ گئی ہے – صارفین کی جانب سے سوالات اٹھائے گئے ہیں کہ کیا فضائی میزبانوں نے قانون ہاتھ میں لیا؟یا ڈیوٹی میں کوئی غفلت برتی؟ خوشی کے چند بول یا اظہار جو لاکھوں چہروں پرمسکراہٹیں بکھیر دے ، کیا جرم ہے ؟حکام کی کارروائی پرسوشل میڈیا پر تنقید جاری ہے۔ تاہم اس حوالے سے پی آئی اے حکام کا کہنا ہے کہ یونیفارم میں ویڈیو بنانا قانون کی خلاف ورزی ہے ۔

میڈیا رپورٹس کے مطابق صارفین کی جانب سے یہ بھی پوچھا گیا ہے کہ بتایا جائے کہ قومی ایئرلائن کے 250 ارب روپے کے خسارے کی وجہ یہ دونوں ایئرہوسٹس ہیں؟اگر نہیں ہے تو پھر کیا انہیں عوام کو خوش کرنے کی سزا دی جارہی ہے؟ایئرلائن انتظامیہ کا اپنا فرض بھی یہی ہے کہ لاجواب سروس دیکر مسافروں کو خوش رکھا جائے،اور دونوں فضائی میزبانوں نے بھی تو یہی کیا ہے-

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں