اوکاڑہ محکمہ جنگلات ملازمین کی ملی بھگت سے درخت چوری ، کتنی مالیت بتائی جارہی ہے؟؟؟

اوکاڑہ ، ساجد علی چوہان

اوکاڑہ محکمہ جنگلات ملازمین کی ملی بھگت سے لاکھوں مالیت کے درخت چوری کر لئے گئے . تفصیلات کے مطابق نئےڈسٹرکٹ فاریسٹ آفیسر اوکاڑہ کا چارج سنبھالتے ہی درجنوں در خت چوری ہو گئے۔ اوکاڑہ فیصل آباد روڈ نہر پل لوئر باری دوآب سے پل پھاٹک کوٹ باری تک دوکلومیٹر کے فاصلہ کے اندر سٹرک کے دونوں اطراف سے درختوں کو چوری کیا گیا ۔ محکمہ ملازمین بڑے درختوں پر لگے نمبروں کو مٹا دیتے ییں اور نئے چھوٹے درختوں پر وہی نمبر لگا دیتے ہیں اور بعد میں وہاں سے وہ درخت لوگوں کو فروخت کر دیتے ییں.

درخت کاٹنے والے لوگو ں کا کہنا کہ ہم نے محکمہ جنگلات سے درخت خریدے ہیں جب محکمہ ملازمین سے اس بارے موقف لیا گیا تو انہوں نے کہا کہ یہ درخت سٹرک پر رکاوٹ بنتے تھے مگر چوری کیے گئے درختوں کا آمدورفت میں رکاوٹ کا کوئی تعلق نہ یے اور ٹال مٹول سے کام لینا شروع کر دیا-

وزیر اعلی ہنجاب ۔سیکرٹری محکمہ جنگلات ۔کمشنر ساییوال ڈی سی او اوکاڑہ اس چوری کیے گئے درختوں کا نوٹس لیں اور اس میں ملوث ملازمین کے خلاف قانونی کاروائی عمل میں لائی جائے-

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں