دانش جانتا تھا کہ سکون صرف قبر میں ہے ، میرے پاس تم ہو کا اختتام ایسا کیوں ہوا ؟؟؟؟

پاکستانی ڈرامہ کی تاریخ کا کامیاب ترین سیریز میرے پاس تم ہو کی آخری قسط گزشتہ شب نشر کی گئی جس کے بعد سوشل میڈیا اس حوالے سے کریش کر گیا – اور ڈرامہ ٹاپ ‌ٹرینڈ کے بعد اس کی ایک سے بڑھ کر ایک میمز بنانے میں کسی سے کم نہیں، آیا وہ کوئی میچ ہو، ڈرامہ یا کسی سیاسی شخصیت کا بیان، صارفین کوئی نا کوئی مزاحیہ پہلو نکال کر مزیدار میمز سے خود بھی لطف اندوز ہوتے ہیں اور دوسروں کو ہنسنے پر مجبور کر دیتے ہیں۔

ایک صارف کا کہنا تھا کہ مریم اورنگزیب کا کہنا ہے کہ اگر ہماری حکومت ہوتی تو دانش کو بچا لیتے – اسی طرح ایک صارف نے لکھا کہ دانش ایک ہارٹ اٹیک برداشت نہ کر سکا میاں نواز شریف کو پانچ مرتبہ ہارٹ اٹیک ہو چکا ہے لیکن پھر بھی وہ لندن میں ہوا خوری کررہے ہیں – ایک دکاندار نے تو حد ہی کردی اور دکان کے پوسٹر لگوا دیا کہ میرے پاس تم ہو کی آخری قسط کی وجہ سے آج دکان بند رہے گی

میڈیا رپورٹس کے مطابق سب سے زیادہ ایک پوسٹ وائرل ہوئی جس میں سابق وزیراعلی سندھ قائم علی شاہ کی تصویر کیساتھ لکھا گیا کہ دانش کنیریا کی موت کا سن کر افسوس ہوا جس پرقومی کرکٹر اور لیگ سپنر دانش کنیریا نے بھی اپنا ردعمل دیا اور جواب دیا کہ ’یہ کیا بکواس ہے؟ میں زندہ ہوں‘ ۔

جبکہ سب سے زیادہ یہ پوسٹ وائرل ہوئی کہ وزیراعظم عمران خان نے کہا تھا کہ سکون صرف قبر میں ہے اس لئے دانش نے اس پر عمل کیا کیونکہ دانش جانتا تھا کہ سکون صرف قبر میں ہے – اس ٹویٹ کو سب سے زیادہ پسند اور وائرل کیا گیا ہے –

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں