ففتھ وار جنریشن آخر ہے کیا ؟؟؟؟؟ محمد احمد مرتضیٰ کے قلم سے

آج کل عوام کو نئے طریقے سے ورگلایا جا رہا ہے کہ دشمن نے ہم پہ ففتھ جنریشن وار مسلط کر رکھی ہے-

ففتھ جنریشن وار ہے کیا ؟ نئی ٹرک کی بتی پیچھے لگایا ہے قوم کو اور ویسے بھی یہ فلاسفی کسی ذہنی معذور کی تخلیق کردہ ہے دراصل بات یہ ہے ملک میں اپوزیشن جماعتیں تو اپوزیشن کر نہیں رہی اور اس نااہل اور نالائق ٹولے سے حکومت ہو نہیں رہی اور اس جماعت کو قوم پہ مسلط کرنے والے اپنا کام لے چکے اب جی کا جانا ٹھہر چکا ہے بس ذہنی مفلوج قوم کو مزید اپنے فلسفے کے ساتھ جوڑے رکھنے کو یہ من گھڑت کہانی بنائی گئی ہے اور رہی بات سو کالڈ ففتھ جنریشن وار کی تو جناب جب وار جنریشن تبدیل ہوتی ہے تو حکمت عملی بھی تبدیل ہوتی ہے پہلے جنگیں تلواروں اور نیزوں سے لڑی جاتی تھی پھر بندوق اور پستول کا استعمال کیا گیا پھر ٹینک اور توپ خانے استعمال میں لائے گئے پھر ایٹمی ہتھیار آ گئے یہ تو تھیں فورتھ جنریشن اور اگر اب ففتھ جنریشن کا فارمولہ اپلائی کیا گیا ہے تو ظاہر سی بات ہے اس کی حکمت عملی بھی نئی اور پرانی سب حکمت عملیوں سے تبدیل ہوگی بحثیت پولیٹیکل سائنس کے ایک ادنی سے طالبعلم کے جتنی سیاست میں جانتا ہوں یا میں نے پڑھ رکھی ہے تو جناب اب جنگیں ہتھیاروں سے نہیں بلکہ کولڈ وار اسٹریٹجی کے تحت لڑی جائیں گی اور قوموں کو اقتصادی طور پر مفلوج کرکے ذلت سے مارا جائے گا آپ اپنے ارد گرد کے ممالک پہ نظر دوڑائیں تو ہر ملک اقتصادی میدان میں مضبوط ہونے کی حکمت عملی بنانے میں مصروف ہے ایران اور امریکا کا تنازعہ اس قدر ہائی لائٹ ہونے کے باوجود جنگ کیوں نہ ہوئی؟ کیونکہ امریکہ کولڈ وار میں مصروف ہے اور وہ ایران کو اقتصادی طور پر سب سے الگ کرکے اپنا بدلہ لے گا رہی بات پاکستان پہ مسلط کی جانے والی ففتھ جنریشن وار کی تو جناب عرض یہ ہے جب سے پاکستان پہ عمران نیازی اور اس کا نااہل ٹولہ پاکستان پہ مسلط ہے ملک اسی دن سے رو بہ زوال ہے تو کسی دشمن کو کیا ضرورت کہ اس نااہل حکومت سے ملک کی جان بچانے کے لیے میدان میں آئے جبکہ کسی کو کچھ کرنے کی ضرورت ہی نہیں اس جماعت کی سربراہی میں ملک پہلے ہی مفلوج ہوا پڑا ہے تو جناب یہ ففتھ جنریشن وار والا چورن کہیں اور جاکے بیچو رہی بات میڈیا اور سوشل میڈیا کی تو اپوزیشن میں ہوتے ہوئے نیازی صاحب کا سب سے بڑا ہتھیار ہی میڈیا بالخصوص سوشل میڈیا تھا اب جب اسے استعمال کرتے ہوئے وہ حکومت میں آ ہی گئے ہیں تو انہیں ڈر ہے کہ کہیں یہی ہتھیار ان کی ذلت و رسوائی کا پیش خیمہ ثابت نہ ہوں کیونکہ اپوزیشن تو خاموش تماشائی بنی ہوئی ہے میڈیا ہی کچھ بات کرے تو کرے یا سوشل میڈیا کے ذریعے عوام اپنے مسائل اپنی مدد آپ کے تحت اجاگر کرنے میں مصروف ہیں تو موصوف نیازی صاحب کو خطرہ ہے کہیں ان کے خلاف لوگوں کا غم و غصّہ مزید نہ بڑھ جائے اس لیے ایسی پوسٹیں کرواتے ہیں اور قوم کو ففتھ جنریشن وار کے ڈر سے اس نااہل حکومت کے زیر سرپرستی رہنے پر مجبور کر رہے ہیں جب تک یہ مفاد پرست ٹولہ ملک پہ قابض ہے اس وقت تک ملک اقتصادی طور پر کمزور ہی ہوگا تو دشمن کو کیا ضرورت کہ اس کمزور معیشت والے ملک کو تباہ کرنے پر اپنا سرمایہ ضائع کرے کیونکہ دنیا کی طاقتیں اس بات پر متفق ہیں کہ مضبوط اکانومی والے ممالک کو اپنا ہدف بنائیں اور اپنے مفادات حاصل کریں اس لیے عمران نیازی اور اس کی حکومت کو کسی دشمن یا کولڈ وار کی ضرورت ہی نہیں ہے کیونکہ یہ لوگ تو بذات خود ملک اور قوم کی رسوائی کا سبب بن رہے ہیں پچھلے دو سالوں میں ملک ہر میدان میں زوال کا شکار ہے چاہے وہ اقتصادیات کا میدان ہو لائن آرڈر ہو یا خارجہ محاظ کسی بھی میدان میں یہ حکومت ڈیلیور کرنے میں کامیاب نہیں ہوئی بلکہ ہر طرف سے ملک و قوم کو ناکامی کا سامنا ہے اقتصادی میدان میں حکومت کے جاری کردہ اعدادوشمار کے مطابق پچھلے ایک سال میں دس لاکھ لوگ بے روزگار ہوئے اور جس طرح سے کام جاری ہے تو ماہرین اقتصادیات کے مطابق اگلے سال میں مزید بارہ لاکھ افراد بے روزگار ہوں گے آٹے اور چینی کے بحران اور قیمتوں میں بے پناہ اضافے نے گڈ گورننس کی کلائی کھول کر رکھ دی لائن آرڈر کی بات کریں تو بے روزگاری کی وجہ سے چوری اور ڈکیتی کی بڑھتی ہوئی وارداتوں پر حکومت کا کنٹرول نہیں ہے اور اگر بات خارجہ پالیسی کی کریں تو کشمیر کے ساتھ جو مودی سرکار نے کیا وہ سب کرنے کی جرات پچھلے ستر سالوں میں انڈین حکمرانوں کو نہ ہوئی لیکن ہم نے صرف تقاریر پر ہی بات ختم کردی اور کسی بھی سطح پر کشمیریوں کا ساتھ نہ دیا بلکہ ہمارے وزیراعظم نے جن ممالک کے سربراہوں کی ملک میں آمد ہر بھرپور پروٹوکول دیا اور ان کی گاڑیاں ڈرائیو کیں انہوں نے مسئلہ کشمیر پر دشمن ملک بھارت کے وزیراعظم نریندرا مودی کو امن ایوارڈ دئیے اور ہم صرف قوم کو یہی بتاتے رہے کہ جناب ہمیں سفارتی محاذ پر بہت پذیرائی حاصل ہورہی ہے ان سب مشکلات میں وہ کیسا دشمن ہوگا جو عمران نیازی کے خلاف سازشیں کرے گا اور ملک و قوم پر ففتھ جنریشن وار مسلط کرے گا اور کوئی اس نااہل حکومت کے خلاف ہوگا تو وہ یقیناً ملک و قوم کا حامی ہی ہوگا نیازی حکومت نے پہلے قوم کو احتساب کا نعرہ دیا اور اپوزیشن کے تمام بڑے راہنماؤں کو چور ڈاکو کہہ کر پابند سلاسل کردیا جب وہاں سے بھی کچھ حاصل نہ ہوا تو یہ نیا سوشہ چھوڑ کر عوام کو مزید بیوقوف بنایا جارہا ہے-

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں