سابق صدر آصف زرداری کی 65 ویں سالگرہ ، فیصل آباد میں سالگرہ کی تقریب کیسی رہی؟


رپورٹ ، رانا خاور جاوید

سابق صدر پاکستان جناب آصف علی زرداری کی 65 ویں سالگرہ کی تقریب نائب صدر آغا اعجاز احمد کی رہائش گاہ واقع ملت ٹاؤن میں انتہائی عقیدت و احترام کے ساتھ منائی گی ، اس پروقار تقریب کے مہمان خصوصی سٹی صدر رانا نعیم دستگیر خاں تھے جبکہ دیگر شرکاء میں سنئیر رہنماماسٹر اشفاق احمد ، ڈویژنل سیکرٹری فنانس میاں اشفاق حسین ، نائب صدر ڈویژن فیصل آباد چوہدری صادق علی جٹ ، ٹکٹ ہولڈر ندیم غفاری ، اطہر شریف میڈیا کوآرڈینیٹر ، افتخار حلیم رضا قائم قائم مقام سیکرٹری ، سابق نائب صدر ملک صغیر احمد اعوان ، رہنما ٹریڈر سیل آفتاب بٹ ، نائب صدر سٹی میاں بشارت علی ، آفس سیکرٹری شیخ یاسین ، مہر پرویز اختر پیجی ، رانا مشتاق احمد ، محمد علی ، ڈاکٹر لطیف بابر ، ملک زبیر احمد ، سجاد حسین ہاشمی ، فاروق احمد اور سرفراز انصاری نے بھی خصوصی طور پر اس تقریب میں شرکت کی ۔

مہمان خصوصی رانا نعیم دستگیر خاں نے شرکاء تقریب سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ محترمہ بینظیر بھٹو شہید کی شہادت کے بعد جو سیاسی خلاء پیدا ہوا تھا اسے مرد حر آصف علی زرداری نے اپنی فہم و فراست سے پورا کیا ہے، وہ اس نازک موقع پر ایک عظیم سیاسی رہنما کے طور پر منظر نامے پر ابھر کر سامنے آئے، ملک جل رہا تھا اور سندھ کے عوام میں محرومیوں کے سائے طویل ہوتے نظر آرہے تھے کہ جس وقت انہوں نے پاکستان کھپے کا نعرہ بلند کیا۔ یہ نعرہ ان کی وطن سے محبت کی اعلی ترین مثال ہے،

انہوں نے کہا کہ رئیس آصف علی زرداری نے اقتدار ملتے ہی ملک کو درپیش بحرانوں سے نکالا، ان کا 18ویں ترمیم کے ذریعہ سے پارلیمنٹ کو مضبوط بنانا یہ ایک عظیم کارنامہ ہے ، اسکے ساتھ ہی انہوں نے NFC ایوارڈ کے اجراء کے ذریعہ سے صوبائی خود مختاری کی اعلی ترین مثال قائم کی ہے، رانا نعیم دستگیر خاں نے مذید کہا کہ صدر زرداری نے ناصرف شمشی ائربیس کو امریکہ سے واگزار کروا کر ملک کے اقتدار اعلیٰ کو بحال کروایا تھا بلکہ انہوں نے پاک ایران کے ساتھ گیس پائپ لائن اور چین کے ساتھ سی پیک کوریڈور جیسے منصوبوں کا آغاز کرکے ملک کو ترقی و خوشحالی کی شاہراہ پر گامزن کیا ۔

انہوں نے مذید کہا کہ اس وقت حکمرانوں کی غلط پالیسیوں کے سبب ملک کے حالات بیحد سنگین ہو چکے ہیں، صدر آصف زرداری نے ملک کو ان بحرانوں سے نکالنے کے لئے حکومت کو خدمات پیش کرنے کا عندیہ دیا تھا لیکن بد قسمتی سے حکمرانوں نے ان کے جذبہ خیر سگالی کا تمسخر اڑاتے ہوئے کہا کہ اپوزیشن NRO مانگ رہی ہے ۔ حالانکہ ہم نے تو کبھی ان حکمرانوں سے این آر او نہیں مانگا تھا،البتہ اب ان حکمرانوں نے عوام کی آنکھوں میں دھول جھونکتے ہوئے انڈین جاسوس کلبھوشن کو رات کی تاریکی میں این آر او دے دیا ہے ۔ انہوں نے مذید کہا کہ ان حکمرانوں کو یہ تک معلوم نہیں ہے کہ جب اسمبلی کا سیشن چل رہا ہو تو صدر آرڈیننس جاری نہیں کرتا ۔لیکن یہ ناصرف سیاسی طور پر نابلد ہیں بلکہ انہیں آئین اور قانون کی بھی کوئی شد بد نہیں ہے ۔
تقریب کے آخر میں سالگرہ کا کیک کاٹا گیا ۔ اس موقع پر صدر آصف علی زرداری کی صحت اور دراز عمر کے لئے دعا بھی کی گئ ۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں