وزیراعظم عمران خان کے 2 معاونین خصوصی عہدوں سے مستعفی ، مزید استعفوں کی بازگشت؟؟

اسلام آباد ، نیوز ڈیسک

آج کے دن اسلام آباد میں بڑی ہلچل مچی ہوئی ہے اور ابھی تک وزیراعظم عمران خان کے 2 معاونین خصوصی اپنے عہدوں سے مستعفی ہو چکے ہیں جبکہ ابھی مزید استعفوں کی بازگشت سنائی دے رہی ہے – واضح رہے کہ وزیرِاعظم کے معاون خصوصی برائے صحت ڈاکٹر ظفر مرزا اور معاون خصوصی برائے ڈیجیٹل پاکستان تانیہ ایدروس نے اپنے عہدوں سے استعفیٰ دے دیا ہے۔

میڈیا رپورٹس کے مطابق ڈاکٹر ظفر مرزا نے ٹویٹر پر اپنے پیغام میں کہا ہے کہ انہوں نے وزیراعظم کے معاونین کے کردار پر جاری منفی بحث اور حکومت پر تنقید کے بعد استعفیٰ دینے کا فیصلہ کیا – زفر مرزا کے مستعفی ہونے سے کچھ دیر پہلے وزیراعظم کی معاون خصوصی برائے ڈیجیٹل پاکستان تانیہ ایدروس نے کہا تھا کہ دہری شہریت کے معاملے میں ان پر ہونے والی تنقید سے ڈیجیٹل پاکستان منصوبہ متاثر ہو رہا ہے۔ اس لیے انہوں نے مستعفی ہونے کا فیصلہ کیا ہے۔ ظفر مرزا کا کہنا ہے کہ وہ عالمی ادارہ صحت کو چھوڑ کر عمران خان کی ذاتی درخواست پر پاکستان آئے تھے۔ انہیں اطمینان ہے کہ وہ ایک ایسے وقت میں جا رہے ہیں جب پاکستان میں کورونا وائرس کا زور ٹوٹ رہا ہے۔

میڈیا رپورٹس کے مطابق تانیہ ایدروس نے اپنے ٹویٹ میں استعفے کی نقل بھی منسلک کی ہے جس میں انھوں نے لکھا ہے کہ ان کی کینیڈین شہریت کے حوالے سے باتیں کی گئی ہیں جو انہوں نے اپنی مرضی سے نہیں لی بلکہ اس وجہ سے ان کے پاس ہے کہ وہ کینیڈا میں پیدا ہوئی تھیں۔ کچھ دن پہلے حکومت نے وزیراعظم کے معاونین خصوصی اور مشیران کے اثاثوں اور شہریت کی جو تفصیلات جاری کی تھیں اس کے مطابق تانیہ ایدروس سمیت سات ارکان یا تو دہری شہریت کے حامل ہیں یا وہ کسی دوسرے ملک کے مستقل رہائشی ہیں۔

واضح رہے کہ تانیہ ایدروس کے پاس کینیڈا کی شہریت ہے اور وہ سنگاپور کی مستقل رہائشی ہیں۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں