لاہور ہائیکورٹ کا ڈاکٹر اقرار کی وائس چانسلر تقرری کا نوٹیفکیشن پیش کرنیکا حکم، کتنی مہلت دی؟؟

فیصل آباد (آن لائن)

لاہور ہائیکورٹ نے زرعی یونیورسٹی فیصل آباد کے سابق وائس چانسلر پروفیسر ڈاکٹر اقرار احمد کی میرٹ پر تقرری کیس اور وزیر اعلیٰ پنجاب عثمان بزدار کیخلاف توہین عدالت کی درخواست پر آج سماعت ہوئی۔ عدالت کو بتایا گیا کہ پروفیسر ڈاکٹر اقرار احمد کی بطور وائس چانسلر تقرری کی سمری گورنر پنجاب کو ارسال کر دی گئی ہے- عدالت نے حکم دیا کہ 15 اکتوبر 2020 ء بروز جمعرات کو صبح 10 بجے عدالت میں ڈاکٹر اقرار احمد کی تقرری کا نوٹیفیکیشن پیش کیا جائے اور پرنسپل سیکرٹری گورنر خود پیش ہوں۔

آن لائن کے مطابق سپریم کورٹ آف پاکستان کے تین رکنی بنچ جس کے سربراہی جسٹس منظور احمد ملک کر رہے تھے نے بھی آج ڈاکٹر اقرار احمد کی طرف سے زیر سماعت اپیل پر سماعت کی اس موقع پر عدالت کو بتایا گیا کہ مقدمہ کی سماعت سپریم کورٹ کے موجودہ چیف جسٹس گلزار احمد خاں اور دیگر دو جج صاحبان کر رہے ہیں جبکہ سپریم کورٹ کے احکامات پر عمل نہ کرنے پر توہین عدالت کی کاروائی عدالت عالیہ لاہور کے جج جسٹس ساجد محمود سیٹھی کی عدالت میں زیرسماعت ہے جس کی آج بھی سماعت ہونی ہے سپریم کورٹ کے سہ رکنی بنچ نے وکلاء کے ابتدائی دلائل سننے کے بعد اپیل کی سماعت غیر معینہ عرصہ کیلئے ملتوی کر دی ہے آئیندہ سماعت سپریم کورٹ کے چیف جسٹس گلزار احمد خاں کی سربراہی میں ہوگی عدالت نے وکلاء کی یہ استدعا مسترد کر دی عدالت عالیہ میں زیر سماعت توہین عدالت کی کاروائی روک دی جائے۔

سپریم کورٹ کے مختصر احکامات کے بعد دوپہر 2 بجے عدالت عالیہ لاہور کے جج جسٹس ساجد محمود سیٹھی نے پروفیسر ڈاکٹر اقرار احمد کی درخواست پر سماعت شروع کی اس موقع پر حکومتی وکیل نے عدالت کو بتایا کہ سپریم کورٹ اور عدالت عالیہ کے احکامات کی روشنی میں پروفیسر ڈاکٹر اقرار احمد کی بطور وائس چانسلر تعیناتی کے نوٹیفیکیشن کیلئے سمری گورنر پنجاب کو ارسال کر دی ہے عدالت عالیہ کے جج جسٹس ساجد محمود سیٹھی نے حکم دیا کہ کل 15 اکتوبر 2020 ء بروز جمعرات کو صبح 10 بجے عدالت میں نوٹیفیکیشن کی کاپی پیش کی جائے اور گورنر کے پرنسپل سیکرٹری عدالت میں خود پیش ہوں۔ یہ امر قابل ذکر ہے کہ سابق وائس چانسلر ڈاکٹر محمد اشرف کو چیف جسٹس آف پاکستان جسٹس گلزار احمد خاں کی سربراہی میں ایک مختصر فیصلہ کی روشنی میں عہدہ سے ہٹا دیا گیا تھا انہوں نے 12 اکتوبر 2020 کو عدالت عالیہ لاہور کے دو رکنی بنچ میں ارجنٹ رٹ درخواست دائر کی تھی جو عدالت عالیہ کے دو رکنی بنچ نے ابتدائی سماعت کے بعد ڈاکٹر محمد اشرف چوہدری کی درخواست واپس لینے پر خارج کر دی تھی۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں