فیصل آباد میں بھی کرونا حملے شدید ،دی یونیورسٹی آف فیصل آباد کے پروفیسر بھی شکار ہو گئے؟

فیصل آباد  (آن لائن)

ملک بھر کی طرح فیصل آباد میں بھی کرونا وائرس کے حملے شدت اختیار کرنے لگے مزید کرونا کی 2 مشتبہ خواتین دوران علاج زندگی کی بازی ہار گئیں جبکہ دی یونیورسٹی آف فیصل آباد کا پروفیسر ڈاکٹر محمد عمران حنیف بھی کرونا کا شکار ہوگئے۔ سرکاری ہسپتالوں میں کرونا کے کنفرم اور مشتبہ مریضوں میں اضافہ ہونے سے گزشتہ 24گھنٹوں کے دوران الائیڈ ہسپتال میں 9 اور سول ہسپتال میں 5 افراد کو کرونا کی علامات ظاہر ہونے پر آئیسولیشن وارڈ میں داخل کرکے علاج معالجہ شروع کردیاگیا اور ان کے کرونا ٹیسٹ تشخیص کیلئے لیبارٹری بھجوا دیئے گئے‘

 آن لائن کے مطابق الائیڈ ہسپتال کے آئی سی یو وارڈ میں کورونا کی 2 مشتبہ مریضہ 65سالہ اشرف بی بی زوجہ طالب حسین سکنہ اقبال کالونی تاندلیانوالہ اور 75سالہ نذیراں بی بی زوجہ نور احمد سکنہ 342ج ب کرونا کی رپورٹ آنے سے قبل ہی زندگی کی بازی ہار گئی۔ تاہم ہسپتال انتظامیہ نے ضروری کارروائی کے بعد نعشیں ورثاء کے حوالے کردی گئیں۔جبکہ سول ہسپتال میں دی یونیورسٹی آف فیصل آباد سرگودھا روڈ کا پروفیسر ڈاکٹر محمد عمران حنیف،  25سالہ سلطان‘35سالہ عارف‘55سالہ اظہر‘67سالہ عبداللہ اور 49سالہ عابد کو کرونا کی علامات ظاہر ہونے پر ہسپتال لایا گیا انہیں آئیسولیشن وارڈ داخل کر لیاگیا ہے۔

ڈاکٹرز کا کہنا ہے کہ کرونا کی دوسری لہر کے دوران مریضوں کی تعداد میں روز بروز اضافہ ہورہا ہے جو کہ لمحہ فکریہ ہے شہریوں کو چاہیے کہ وہ کرونا ایس او پیز پر سختی سے عمل کریں۔ ہاتھوں کو بار بار دھوئیں‘سینی ٹائزر‘ ماسلک کا استمال اور رش والی جگہوں پر جانے سے گریز کریں بلاضرورت گھروں سے باہر نہ نکلیں تاکہ کرونا وائرس سے محفوظ رہا جا سکے۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں