نیوزی لینڈ کا دورہ ایک چیلنج ، کوئی دبائو نہیں، لطف اندوز ہونگے؟؟ قومی کرکٹ کپتان بابر اعظم

لاہور ، سپورٹس ڈیسک

پاکستان کرکٹ ٹیم کے کپتان بابر اعظم کراچی کنگز کو پی ایس ایل فائیو کا چیمپئن بنوا کر واپس لاہور پہنچ چکے ہیں اور آج انہوں نے پاکستان کرکٹ بورڈ ہیڈکوارٹر آئے اور پریس کانفرنس – اس موقع پر انہوں نے بتایا کہ نیوزی لینڈ کے دورے پر جا رہے ہیں، بہت پرجوش ہیں، نیا چیلنج اور ذمہ داری ملی ہے، دباؤ نہیں ہے، لطف اندوز ہوں گا۔ ہم بیک ٹو بیک کھیل رہے ہیں اور پر اعتماد ہیں، نیوزی لینڈ میں ہمارا ریکارڈ اچھا رہا ہے، اچھی کرکٹ کھیلیں گے، کوشش یہی ہےکہ اچھا کھیل پیش کروں، بہت کچھ سیکھنے کی کوشش کی ہے۔

پریس کانفرنس کے دوران میڈیا نمائندگان کے سوالات کا جواب دیتے ہوئے انہوں نے کہا کہ کوشش ہوتی ہے ذمہ داری لوں اور اسی ذمہ داری کے سا تھ کھیلتا ہوں، کوشش ہے نیوزی لینڈ، آسٹریلیا، انگلینڈ میں سینچری کروں، آسٹریلیا کے بعد اب انگلینڈ میں سینچری اسکور کرنے کا ارادہ ہے۔ بابر اعظم نے قومی ٹیم کے سابق کپتان سرفراز احمد سے متعلق کہا ہے کہ سرفرازاحمد اور اظہر علی سے بہت کچھ سیکھا ہے، ان سے مشورہ بھی کروں گا، فیصلہ مجھے کرنا ہے لیکن مشاورت کروں گا۔

میڈیا رپورٹس کے مطابق قومی کرکٹ کپتان نے واضح کیا کہ ٹیم میں گروپنگ کی کوئی بات نہیں سب ایک یونٹ ہیں، تمام کھلاڑی بڑے اچھے ہیں اور اچھا کھیلنے کی کوشش کرتے ہیں، چیلنجز کا ہمیشہ سامنا ہوتا ہے، بیرون ملک کھیلنا ہمیشہ چیلنج ہوتا ہے، بیرون ملک ہم اچھا کھیلتے آ رہے ہیں، انگلینڈ میں ہماری پرفارمنس اچھی تھی۔ نوجوان فاسٹ بالرز نے اچھی کارکردگی دکھائی، اُنہیں سپورٹ کرنا ضروری ہے۔ انہوں نے مکی آرتھر سے متعلق بات کرتے ہوئے کہا کہ ملکی آرتھر کے دیئے ہوئے اعتماد کی وجہ سے ہمیشہ اچھی پرفارمنس رہی۔

بابر اعظم کا کہنا تھا کہ پاکستان سپر لیگ (پی سی بی) نے لانگ ٹرم کپتانی کے لیے اعتماد اور آزادی دی ہے، اس لیے دباؤ نہیں، ہر ٹور پر کھلاڑیوں کو اعتماد اور محنت کی ضرورت ہے، رزلٹ ہمارے ہاتھ میں نہیں ہے۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں