کراچی بھینس کالونی کا گوبر سمندر میں پھینک دیا جاتا ہیں ، ہم کیا کرینگے؟؟؟ زرتاج گل وزیر

اسلام آباد ، نیوز ڈیسک

وزیر مملکت برائے موسمیاتی تبدیلی زرتاج گل نے اس عزم کا اظہار کیا ہے کہ گائے کے گوبر سے انرجی پیدا کرکے بسیں چلا کر دکھائیں گے۔ انہوں نے مزید واضح کیا کہ ہم بی آرٹی کراچی بنانے جارہے ہیں، کراچی کی بھینس کالونی میں گائے کا گوبر ساحل سمندر میں پھینک دیا جاتا ہے، کوشش ہے گاڑیوں کو 2030 تک الیکٹرک گاڑیوں پر تبدیل کر دیں۔

میڈیا رپورٹس کے مطابق سینیٹ اجلاس میں فضائی آلودگی سے متعلق تحریک پر اظہار خیال کرتے ہوئے انہوں نے کہا کہ فضائی آلودگی کوئی سیاسی بحث کا موضوع نہیں، دنیا میں موسمیاتی تبدیلی ڈیڑھ سو سال پرانی ہے۔ پاکستان میں موسمیاتی تبدیلی سے متعلق بہت زیادہ کام کرنے کی ضرورت ہے۔اس لئے کوشش ہے اپنی گاڑیوں کو 2030 تک الیکٹرک گاڑیوں پر تبدیل کرا دیں۔ ہماری کوشش ہے کہ بائیو گیس کو استعمال کرکے گاڑیوں کے ایندھن کے طور پر استعمال کریں۔ وزیر موسمیاتی تبدیلی کا کہنا تھا کہ ہم نے آلودگی کو بڑی حد تک کم کیا ہے، پنجاب حکومت نے دھواں چھوڑنے والی 98 ہزار سے زائد گاڑیوں کو چالان کیا ہے۔ چالان کرنے کی وجہ سے 3 کروڑ روپے سے زائد ریکور کیا ہے۔ آئل ریفائنری کمپنیز کو 3 سال کا وقت دیا ہے کہ اپنی ٹیکنالوجی کو اپ گریڈ کر لیں۔

زرتاج گل وزیر نے اس عزم کا اظہار کیا کہ گائے کے گوبر سے انرجی پیدا کرکے بسیں چلا کر دکھائیں گے، ہم بی آرٹی کراچی بنانے جارہے ہیں، کراچی کی بھینس کالونی میں گائے کا گوبر ساحل سمندر میں پھینک دیا جاتا ہے۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں