ضلعی حکومت نے توہین عدالت کی اور ہمیں برباد کردیا ہے ، فیصل آباد کی تاجر برادری پھٹ پڑی

فیصل آباد(آن لائن)

ضلعی حکومت نے توہین عدالت کرتے ہوئے عدالتی حکم کو پس پشت ڈال کر ہماری دکانوں اور کھوکھوں کو مسمار کر کے ہمیں برباد کر دیا ہے،تاجروں کی کوئی سیاسی جماعت نہیں ہوتی اور نہ ہم کسی سیاسی جماعت کے آلہ کار ہیں‘ تاجر محبت وطن ہیں اور قبضہ مافیا کہنا ظلم اور زیادتی ہے‘ ان خیالات کا اظہار سابق ڈپٹی میئر محمد امین بٹ چیئرمین سپریم انجمن تاجران نے حرم کلاتھ مارکیٹ گوردوارہ گلی نمبر 3کے متاثرہ دوکانداروں سے اظہار یکجہتی کیلئے منعقدہ اجلاس کے شرکاء سے کیا‘اس موقع پر حرم کلاتھ مارکیٹ کے صدر شیخ ارسلان اسلم اچھی‘ جنرل سیکرٹری شیخ ظہور احمد‘ باؤ اکرام‘ حاجی ظہیر‘ حاجی جاوید‘ حاجی اقبال‘ شیخ وقاص‘ خواجہ خرم‘ بابا غفور‘ منیب احمد‘ حسن رحمانی‘ نعیم جاوید کے علاوہ حرم کلاتھ مارکیٹ گوردوارہ گلیوں کے متاثرہ دوکانداروں کی کثیر تعداد موجود تھی‘ انہوں نے کہا کہ سول کورٹ کے سٹے آرڈر کے باوجود حرم کلاتھ مارکیٹ گوردوارہ گلیوں کی دوکانوں اور کھوکھوں کو مسمار کرنا ظلم اور زیادتی ہے –

ہم ضلعی حکومت کے اس اقدام کی مذمت کرتے ہیں‘ تاجروں نے ہر اچھے برے وقت میں پاکستان کی ہر حکومت ساتھ ساتھ یا ہے مشکل کے وقت آگے بڑھ کر جانی مالی مدد کی ہے‘ مگر موجودہ حکومت نے تاجروں کی دوکانوں کو مسمار کر کے ان کا معاشی قتل کر دیا ہے‘ جو سراسر ظلم اور زیادتی ہے‘ میں ضلعی حکومت سے اپیل کرتا ہوں کہ حرم کلاتھ مارکیٹ گوردوارہ گلیوں کے متاثرہ دوکانداروں کو متبادل جگہ فراہم کی جائے تاکہ یہ تاجر اپنا لین لین کر سکیں‘ کیونکہ ان کی دوکانیں مسمار ہونے سے ان کا کاروبار تباہ ہو گیا ہے اور جن لوگوں سے لین دین ہے وہ ان کی گریبان تک پہنچ چکے ہیں‘ انہوں نے مارکیٹ کے تاجروں سے بھی اپیل کی کہ اس وقت متحد‘ یک جان دو کالب ہو جائیں اور اتفاق و اتحاد سے اس مشکل وقت کا مقابلہ کریں‘ اس موقع پر حرم کلاتھ مارکیٹ کے صدر شیخ ارسلان اسلم اچھی نے کہا کہ ہمارے ساتھ ضلعی حکومت نے ظلم کی انتہا کر دی ہے‘ مگر کوئی بھی ارکان اسمبلی ہماری داد رسی کیلئے نہیں آیا کل کس منہ سے ووٹ مانگے ہمارے پاس آئیں گے‘ چالیس‘ پچاس سالوں سے ہم یہاں پر کاروبار کر رہے ہیں اور کرایہ ادا کر رہے ہیں‘ ہمارا کیس ہائی کورٹ میں ہے اور ہائی کورٹ نے سٹے آرڈرجاری کیا ہوا ہے مگر ضلعی حکومت نے توہین عدالت کرتے ہوئے عدالتی حکم کو پس پشت ڈال کر ہماری دکانوں اور کھوکھوں کو مسمار کر کے ہمیں برباد کر دیا ہے‘ ہم وزیراعظم پاکستان عمران خان اور شہر کے اراکین اسمبلی کے اپیل کرتے ہیں کہ ہماری دادرسی کی جائے اور ہمیں ہماری دکانیں واپس دلوائی جائیں تاکہ ہم اپنا کاروبار کر سکیں اور اپنا اور اپنے بچوں کا پیٹ پال سکیں۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں