فیصل آباد ایکسائز میں میگا کرپشن کا بڑا سکینڈل منظر عام پر ،50 گاڑیوں کی رجسٹریشن منسوخ؟

فیصل آباد(قمر مرزا سے)

فیصل آباد ایکسائز اینڈ ٹیکسیشن ڈیپارٹمنٹ میں میگا کرپشن کا بڑا اسکینڈل منظر عام پر آگیا، ایکسائز آفس نے شہریوں سے بھاری رقوم وصول کرنے کے باوجود 50 گاڑیوں کی رجسٹریشن کینسل جبکہ مزید کی تیاری شروع کر دی، ریونیو جمع کروانے کے باوجود گاڑیوں کی رجسٹریشن کینسل ہونے پر شہری سراپا احتجاج بن گئے جبکہ ایکسائز افسران اور عملہ کی جانب سے معاملہ دبانے کی کوششیں کی جارہی ہیں –

تفصیل کے مطابق ایکسائز آفس کے وہیکل انسپکٹرز نے مختلف ذرائع کے ذریعے قیمتی گاڑی مالکان سے رجسٹریشن کی مد میں لاکھوں روپے وصول کر کے گاڑیوں کی رجسٹریشن کمپیوٹرائزڈ ریکارڈ میں کر لی تاہم اس کے باوجود رجسٹریشن کی مد میں وصول کئے جانیوالے لاکھوں روپے کا ریونیو سرکاری خزانے میں جمع نہیں کروایا جارہا اور یہ سلسلہ گزشتہ کافی عرصہ سے چلایا جارہا ہے – واضح رہے کہ لاہور ایکسائز آفس میں چند ہفتے قبل ایسی ہی ایک میگا پکڑی جانیوالی کرپشن کے بعد ایکسائز انسپکٹرز کے خلاف اینٹی کرپشن میں مقدمات درج کروائے گئے ہیں-

ذرائع کا کہنا ہے کہ لاہور ایکسائز آفس میں گاڑیوں کی رجسٹریشن کی مد میں پکڑی جانیوالی کرپشن کے بعد فیصل آباد ایکسائز آفس کے مافیا کلرک افتخار پنسوتہ ، ساجد گجر اور انسپکٹر اختر حسین کے ساتھ ساتھ اسسٹنٹ ایکسائز اینڈ ٹیکسیشن آفیسر (AETO) الطاف چیمہ نے ملی بھگت سے شہریوں کی گاڑیاں جو انہوں نے خود کمپیوٹر ریکارڈ میں فیڈ کی تھیں اس مد میں عوام سے رجسٹریشن ٹیکس کی میں فیسیں وصول کر لیں لیکن یہ لاکھوں روپے خردبرد کر لئے لیکن ان رجسٹریشن ٹیکس کی مد میں جمع کیا گیا ریونیو ہڑپ کر لیا – لیکن اب متعلقہ گاڑی مالکان کو نوٹس جاری ہونے پر معاملہ سامنے آیا ہے جس کے بعد اے ای ٹی او الطاف چیمہ اور دیگر کلرک مافیا نے اپنی کرپشن چھپانے اور کاروائی سے بچنے کے لیے ایک فرضی انکوائری کا بہانہ بنا کر شہریوں کی گاڑیاں بلاک کردی ہیں جس کے نتیجے میں متاثرہ گاڑی مالکان ایکسائز اینڈ ٹیکسیشن ڈیپارٹمنٹ فیصل آباد کے چکر لگانے پر مجبور ہیں جہاں پر انہیں خوار کرنے کا سلسلہ شروع کر دیا گیا-

ذرائع کا کہنا ہے کہ ڈائریکٹر ایکسائز احمد سعیید اس حوالہ سے نہ صرف حقائق چھپانے بلکہ اس کرپشن میں ملوث انسپکٹرز اور دیگرملازمین کو بچانے کی بھی سر توڑ کوشش میں مصروف ہےاس امر پر متاثرہ شہریوں نے وزیر اعلی پنجاب، وزیر ایکسائز پنجاب سمیت ڈی جی ایکسائز سے مطالبہ ہے کہ عرصہ سے محکمہ پر براجمان کرپٹ مافیا سےگاڑیوں کے ٹیکس کی مد لوٹی ہوئی رجسٹریشن فیس واپس وصول کی جائے اور کرپٹ افسران اور عملہ کے خلاف محکمانہ کاروائی کے احکامات جار کیے جائیں-

ریونیو وصولی کے باوجود شہریوں کی گاڑیوں کی رجسٹریشن منسوخ کرنے پر ای ٹی او ایکسائز اصغر سجاد مگسی نے رابطہ کرنے پر بتایا کہ چند ہفتے قبل ہونے والے آڈٹ میں گاڑیوں۔کی رجسٹریشن کے مرحلے میں بے ضابطگیاں پائی جانے پر متعدد گاڑیوں کی رجسٹریشنز منسوخ کر کے انکوائری کی جا رہی ہے آپ کی جو بھی گاڑی اس زمرے میں۔آئی ہے آپ اختر صاحب سے رابطہ کر لیں وہ گاڑی اوپن کر دیں گے –

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں