فیصل آباد میں پروفیسر سید ریاض حسین زیدی کی کتاب ” اے رسولِ امیںﷺ ” کی تقریب رونمائی


رپورٹ : پروفیسر ریاض احمد قادری

وطن عزیز کے نامور ماہرِ تعلیم ، نعت گو شاعر جناب پروفیسر سید ریاض حسین زیدی کے چوتھے نعتیہ مجموعہ ” اے رسولِ امیں ﷺ” کی تقریب رونمائی انجمن فقیرانِ مصطفیٰ فیصل آباد کے زیراہتمام اعوان نعت محل غلام محمد آباد فیصل آباد میں 31 مارچ 2021 کو انعقاد پذیر ہوئی۔ تقریب کی صدارت کہنہ مشق استاد شاعر اور بزرگ ماہرِ تعلیم جناب پروفیسر محمد افضل خاکسار نے فرمائی۔ مہمان خصوصی جناب پروفیسر سید ریاض حسین زیدی صاحب کتاب تھے۔مہمانان اعزاز جناب صاحبزادہ محمد لطیف ساجد اور خالق آرزو آف ساہی وال تھے۔ نقابت راقم الحروف پروفیسر ریاض احمد قادری نے کی۔ تلاوت ڈاکٹر محمد اقبال ناز نے پروفیسر سید ریاض حسین زیدی کی نعتیں محمد سلمان منیر خاور اور محمد زبیر نقشبندی نے پیش کیں۔پروفیسر سید شاہد حسین شاہد،پروفیسر محمد طاہر صدیقی،پروفیسر مسعود الرحمان مسعود، محمد اویس ازہر مدنی، ڈاکٹر محمد اعجاز تبسم اور خالق آرزو نے مضامین پیش کئے جبکہ ریاض احمد قادری، سرور خان سرور، محمد اشفاق ہمزالی، ڈاکٹر ملک مقصود احمد عاجز، باسط ممتاز سید،ساغر ہاشمی، صاحبزادہ محمد لطیف ساجد چشتی اور محمد افضل خاکسار نے منظومات پیش کیں ۔ اللہ نواز منصور اعوان نے کتاب کا استقبال کیا اور اپنے خطاب میں اسے بہترین نعتیہ مجموعہ قرار دیا۔

پروفیسر سید شاہد حسین شاہد نے نہایت بسیط مضمون لکھا اور کتاب کے جملہ محاسن بڑی تفصیل سے بیان فرمائے ۔ انہوں نے کتاب کے نام کے حوالے سےنہایت ایمان افزا معلومات فراہم کیں اور قرآن پاک کی ان آیات کا حوالہ دیا جن میں امین کا لفظ استعمال ہوا ہے۔ پھر انہوں نے سید نفیس الحسینی کی نعت کا بتایا جس سے یہ نام لیا گیا ہے انہوں نے اس کتاب کی ان اٹھارہ بحور کا بھی ذکر کیا جن میں شاہ صاحب نے نعتیں کہی ہیں۔ڈاکٹر محمد اعجاز تبسم نے 1981 کی اپنی فرسٹ ایئر اور سیکنڈ ایئر کی ان یادوں کو تازہ کیا جو انہوں نے گورنمنٹ کالج ساہی وال میں پروفیسر سید ریاض حسین زیدی کی شاگردی میں گزاریں ۔ پروفیسر مسعود الرحمان مسعود نے اپنے مضمون میں کتاب کے فنی محاسن بیان کئے۔ محمد اویس ازہر مدنی لاڈلا نے قرآن و حدیث کے حوالے دئیے جن کو زیدی صاحب نے اپنی کتاب میں شعروں میں ڈھالا ہے۔ پروفیسر ریاض احمد قادری نے کہا کہ ساہی وال کے ادبی افق پر نعت کے میدان میں جناب پروفیسر سید ریاض حسین زیدی کاکام مقدار اور معیار کے حوالے سے سب سے زیادہ ہے ۔پروفیسر محمد طاہرصدیقی نے کہا کہ اس نعتیہ مجموعہ میں زیدی صاحب نے صاحبِ حال بزرگ ہونے کی حیثیت سے کیف و سرور کی شاعری کی ہے اور دل کی باتیں کی ہیں ۔ انہوں نے حضورﷺ کی نیابت کی بات کی ہے اور نعت گو شاعروں کو بھی اس میں حصہ دار قرار دیا ہے۔ پروفیسر سید ریاض حسین زیدی نے فقیر مصطفیٰ امیر ؒ کو شاندار الفاظ میں خراج تحسین پیش کیا اور اس تقریب کے انعقاد پر شہرِ نعت کا شکریہ ادا کیا اور بہترین تقریب کے انعقاد پر منتظمین کو مبارک باد پیش کی ۔انہوں نے اپنا نعتیہ کلام بھی سنایا اور بہت داد وصول کی ۔اس موقعہ پر پروفیسر سید ریاض حسین زیدی کو شہرِ نعت اور انجمن فقیران مصطفیٰ فیصل آباد کی طرف سے” بابائے ساہیوال” کا خطاب دیا گیا۔ان کی شاندار نعتیہ خدمات اور چوتھے مجموعہ نعت ” اے رسولِ امیں ﷺ ” کی اشاعت پر انہیں ” فقیر مصطفیٰ نعت ایوارڈ پیش کیا اور 200 نعت ایوارڈ بھی پیش کیا گیا پروفیسر محمد طاہر صدیقی کی طرف سے تحائف پیش کئے گئے۔

منظوم تبصرہ
ازقلم : باسط ممتاز سید

حاصلِ زندگی ،” اے رسولِ امیں ﷺ”
ہے یہی بندگی ،” اے رسولِ امیں ﷺ”

جذبِ دل سےپڑھی ، ” اے رسولِ امیں ﷺ”
سازِ دل پر سنی ، ” اے رسولِ امیں ﷺ”

” اے رسولِ امیں ﷺ” کے ہے اوراق پر
آپ سے روشنی اے رسولِ امیںﷺ

ایک اک حرف ہے آنسوئوں سے دھلا
نور میں ہے رچی ،” اے رسولِ امیں ﷺ”

وجد میں ڈوب کر ذوق سے شوق سے
خونِ دل سے لکھی ، ” اے رسولِ امیں ﷺ”

آپﷺ کے ذکر سے ہو گئی ہرطرف
روشنی روشنی ، ” اے رسولِ امیں ﷺ”

کتنے افکار پیدا ہوئے مر گئے
نعت زندہ رہی ، اے رسولِ امیں ﷺ

ہر سخنور کے نامہ ء اعمال پر
نعت حرفِ جلی ، اے رسولِ امیںﷺ

میں پڑھوں آپ ﷺ کی جالیوں کے قریں
آرزو ہی یہی ،” اے رسولِ امیں ﷺ”

ہوقبولِ شہِ دوجہاں ﷺاے ریاضؔ
آپ نے جو لکھی ، ” اے رسولِ امیں ﷺ”

پائے باسط بھی اس کے وسیلے سے ہی
حاضری دائمی ،اے رسولِ امیں ﷺ

باسط ممتاز سید

پروفیسر سید ریاض حسین زیدی کے چوتھے نعتیہ مجموعہ ” اے رسولِ امیںﷺ ” کی تقریب رونمائی پر منظوم خراجِ تحسین

عشق کا کارواں ، ” اے رسولِ امیں ﷺ ”
الفتوں کا بیاں ، ” اے رسولِ امیں ﷺ ”

نور ہی نور ہے حبِ سرکارﷺ کا
نور کا آسماں، ” اے رسولِ امیں ﷺ ”

حسنِ بندہ نوازؒ اس میں دیکھا گیا
معرفت کی زباں ، ” اے رسولِ امیں ﷺ ”

کہہ رہی ہے سبھی دل کی ہر کیفیت
بابِ سرِ نہاں ، ” اے رسولِ امیں ﷺ ”

ہے ریاضِ قلم کا یہ شہکار اک
فن کا ہے گلستاں، ” اے رسولِ امیں ﷺ ”

نعتِ سرکارﷺ کو راس آئی زمیں
مدح کا آسماں ، ” اے رسولِ امیں ﷺ ”

نعت سرکارﷺ کی آل نے ہے کہی
صدق کی داستاں ، ” اے رسولِ امیں ﷺ ”

سارے الفاظ ہیروں کی صورت جڑے
دل کی ہے رازداں ، ” اے رسولِ امیں ﷺ ”

نکلے دل سے جو آواز، دل میں بسے
وہ ہے روشن نشاں، ” اے رسولِ امیں ﷺ ”

کلکِ زیدی نے کیسا سجایا ہوا
مدحتوں کا سماں ، ” اے رسولِ امیں ﷺ ”

اے ریاض ان کی مدحت ہی جاری رہے
پوری ہوگی کہاں ، ” اے رسولِ امیں ﷺ ”

ریاض احمد قادری

عزت ماٰب جناب سید ریاض حسین زیدی صاحب کے
نعتیہ مجموعہ ”اے رسولِ امیںﷺ“ پر منظوم اظہارِ تحسین
شاہکارِ سخن ”اے رسول امیںﷺ“
خوش نما گلبدن ”اے رسول امیںﷺ“
ہے یہ گلہائے رنگِ عقیدت لئے
اک مہکتا چمن ”اے رسول امیںﷺ“
حمدِ ربِّ جلی سے ہوئی متصف
مدحِ شاہِ زمن ”اے رسول امیںﷺ“
کہکشاں و نجوم و مہ و مہر کی
کیا حسیں انجمن ”اے رسول امیںﷺ“
اس کے ہر لفظ میں عود و عنبر نہاں
اور بوئے خُتن ”اے رسول امیںﷺ“
نسبتِ آلِ پاک شہِ مرسلیںﷺ
تُو نے کی زیبِ تن ”اے رسول امیںﷺ“
سرورق بھی ترا ہے حسیں کس قدر
مدحتوں کی پھبن ”اے رسول امیںﷺ“
نوکِ خامہ پہ اور سطحِ قرطاس پر
مظہرِ علم و فن ”اے رسول امیںﷺ“
پیش ہو گی درِ شاہِ لولاکﷺ پر
اپنی دھن میں مگن ”اے رسول امیںﷺ“
حمدِ باری و نعتِ نبیﷺ کا بنی
کتنا دلکش ملن ”اے رسولِﷺ امیں“
ہو مبارک ریاضِ حسین آپ کو
نو بہارِ سخن ”اے رسول امیںﷺ“
تیری تعریف کیسے بیاں کر سکے
عاجزِ کم سخن ”اے رسول امیںﷺ
ڈاکٹر ملک مقصود احمد عاجز

۔۔۔۔۔خراج تحسین نعتیہ مجموعہ اے رسول امیں۔۔
۔۔ مصنف سید ریاض حسین زیدی ۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔

متاع ِ نسبت ِ آل ِ نبی ھے نعت ِ ریاض
جمال ِ فکر سے ڈھالی ہوئی ھے نعت ریاض

ہر اہل حق کے لیے ھے وسیلہ بخشش کا
کرم کے نور کو پھیلا رھی ھے نعت ریاض

کتاب ِ نور ِ مودت ھے اے رسول امیں
عقیدتوں کی حسیں روشنی ھے نعت ریاض

ہم عاصیوں کے لیے درد و غم کے موسم میں
سکون ِ قلب کا باعث بنی ھے نعت ریاض

سماعتوں کی فضا میں مہکتے لفظوں سے
شعور ِ نعت نبی بانٹتی ھے نعت ریاض

ریاض نام تو پرکیف بھی ھے روشن بھی
اسی لیے تو یہ مہکی ھوٸی ھے نعت ریاض

مہک اٹھی ہیں فضائیں دیار ِ ہستی کی
درود پڑھ کے جو میں نے پڑھی ھے نعت ریاض

حیات افزا یہی ذکر پاک ھے ساغر
دل و نگاہ کی آسودگی ھے نعت ریاض

ساغر ہاشمی فیصل آباد

منظوم خراج تحسین
محوِ ثنا ہے گنبدِ خضریٰ نظر میں ہے
ہر لحظہ ذوق و شوق کی دنیا نظر میں ہے
محمد افضل خاکسار
پروفیسر سید ریاض حسین زیدی کے مجموعہ کلام ” اے رسولِ امیںﷺ” کو
منظوم خراج تحسین

آیا محفل میں حسان کا جانشیں
جس کی تخلیق ہے اے رسولِ امیںﷺ

مصطفیٰﷺ کے ہیں وصاف سید ریاض
خاتمِ بزمِ مدحت کے روشن نگیں

مدحتِ شاہِ کونینﷺ کر کے رقم
صف میں عشاق شہ کی ہوا جاگزیں
جو بھی گم ہےمحبت میں سرکارﷺ کی
بس وہی ہے نگاہِ خدا میں حسیں
اے رسولِ امیں سے ہوا منکشف
دل میں شاعر کے ہے نورِ ماہِ مبیں
نسبتِ آلِ خیرالوریٰ مرحبا
موجِ حسنِ رسولِ خدا آفریں
اے رسولِ امیں کے سخن ور بجا
تیری تخلیق ہے رشکِ خلدِ بریں
اس کو طاہر دعا دے لے اس سے دعا
جس سے ماحولِ مدحت ہوا بہتریں

پروفیسر محمد طاہر صدیقی
پروفیسر سید ریاض حسین زیدی کے مجموعہ کلام ” اے رسولِ امیںﷺ” کو
منظوم خراج تحسین
اے رسولِ امیں ہے کتابِ حسیں
نعتِ سرکارﷺ کا انتخابِ حسیں
رفعتِ ذکرِ محبوبِ رب کا بیاں
عشقِ شاہِ اممﷺ کا نصاب ِ حسیں
مصرعہ ءِ اولیں سے ہے آخر تلک
اس کے ہر شعر میں آب و تابِ حسیں
نسبتِ حضرتِ زیدکے فیض سے
اے رسولِ امیں باریابِ حسیں
ہے ریاضِ محبت میں مہکا ہوا
شاہ ریاض آپ کا ہر گلابِ حسیں
ہرورق پر نئے پھول ہیں کھل رہے
کھل رہا ہے بلاغت کا باب، حسیں
نادرہ کاری ہر شعر سے ہے عیاں
مل رہا نظم کو ہے شبابِ حسیں
انجمن انجمن اب ریاض اآپ کی
گونجتا نعت کا ہے ربابِ حسیں
آسمانِ ادب پر نئی شان سے
چمکا ساجد ہے اک آفتابِ حسیں

صاحبزادہ محمد لطیف ساجد

پروفیسر سید ریاض حسین زیدی کے مجموعہ کلام ” اے رسولِ امیںﷺ” کو
منظوم خراجِ تحسین
کتابِ مدحتِ سرکار اے رسول امیں ﷺ
شعورِ نعت کا شہکار اے رسول امیںﷺ

مہک رہا ہے ہر اک لفظ میں خدا کی قسم
گُلِ سلیقہِ اظہار اے رسول امیںﷺ

قبول کیجئیے یہ تحفہ ریاض حسیں
ہے باکمال قلمکار اے رسول امیں ﷺ

ہمارے گھر میں یہ مجموعہ جس گھڑی پہنچا
مہک اُٹھے در و دیوار اے رسول امیںﷺ

جو آئے بیٹھے ہیں آقا ﷺسبھی پہ لطف و کرم
سبھی ہیں آپ کے حُب دار اے رسول امیںﷺ

سرور خان سرور

سید ریاض حسین زیدی کی نعتیہ تخلیق ” اے رسولِ امیںﷺ” کو منظوم خراجِ تحسین

خوب تر نذرِ محبت ہے ” اے رسولِ امیں ﷺ”
نادر اظہارِ محبت ہے ” اے رسولِ امیں ﷺ”

طرفہ اسلوبِ نگارش ہے اس کا ذوق افزا
وجہِ افزونی ء ِ الفت ہے ” اے رسولِ امیں ﷺ”

حاملِ حسنِ معانی ہے حرف حرف اس کا
ایسا مجموعہ ء ِ مدحت ہے ” اے رسولِ امیں ﷺ”

کنزِ توصیفِ رسالت ہے، گنجِ حمدِ خدا
بحرِ مواجِ عنایت ہے ” اے رسولِ امیں ﷺ”

لائقِ ہدیہ ءِ تحسین ہے ، ریاض حسین
مژ دہ رحمت و راحت ہے ” اے رسولِ امیں ﷺ”

ارشد ا س کو جو پڑھا، دل ہوا گل و گلزار
باغِ فردوس کی نکہت ہے ” اے رسولِ امیں ﷺ”

حکیم ارشد محمود ارشد

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں