گلدستہ نعت ……………… ریاض احمد قادری

فیس بک گروپ غزل رنگ میں پروفیسر مسعود الرحمان مسعود کے طرح مصرع ” سیرتِ مختارﷺ سے کردار اچھا کیجئیے ” پر ان کی صدارت میں ہو نے والے مشاعرے میں لکھی جانے والی 35 نعتوں کا گلدستہ پیش خدمت ہے

نعت شریف 1
پڑھ کے سیرت مصطفیٰﷺ کی خود کو اعلیٰ کیجئیے
” سیرتِ مختارﷺ سے کردار اچھا کیجئیے”
پیروی کر کے نبیﷺ کی لیں نویدِ خُلد آپ
زندگی میں رہنما آقاﷺ کا اسوہ کیجئیے
وہ بلائیں گے تمہیں دربار پر اک دن ضرور
پڑھ کے بس صلِ علیٰ اس کا ارادہ کیجئیے
چھوڑ کر راہِ نبیﷺ گمراہ مت ہو جائیے
آپﷺ کی تقلید میں جنت کا سودا کیجئیے
سرورِ کون و مکاںﷺ کی ذات پُر انوار ہے
کرکے انﷺ سے عشق اپنی شب ستارہ کیجئیے
ہے درود انﷺ پر ہماری دائمی ازلی نجات
پڑھ کے سب صلِ علیٰ خود کو سنوارا کیجئیے
اے ریاضؔ احمد نبیﷺ کی نعت ہے پہچانِ عشق
نعت لکھ کر زیست کا ارمان پورا کیجئیے

ریاض احمد قادری
نعت شریف 2
سوچ کر آقاﷺ کو ہردم ان کا جلوہ کیجئیے
نعت لکھ کر سرورِ دیںﷺ کا نظارہ کیجئیے
سر جھکا کر ڈال کر آنکھیں بھی اپنے دل کے بیچ
اپنے پیارے مصطفیٰﷺ کو ایسے دیکھا کیجئیے
جب وسائل ہی نہیں ہیں پاس جا نے کے وہاں
ان ﷺ کو سینے میں بسا کر واں پہ جایا کیجئیے
کون کہتا ہے کوئی بھی فاصلہ ہے درمیاں
بند کر کے آنکھ انﷺ کو پاس پایا کیجئیے
حاضری سے بھی فزوں تر ہے حضوری کی گھڑی
انﷺ کو ہر دم یاد رکھ کران کو دیکھا کیجئیے
دل مدینے میں رہے آنکھیں رہیں دہلیز پر
جب وہاں جائیں تو پھر واپس نہ آیا کیجئیے
سیرتِ مختارِ عالمﷺ شرحِ قرآں ہے ریاضؔ
سیرتِ مختارﷺ سے کردار اچھا کیجئیے

ریاض احمد قادری
نعت شریف 3
فاصلہ اپنا مدینے کا مٹایا کیجئیے
سوچ کر انﷺ کی ثنا طیبہ میں جایا کیجئیے
سیرتِ سرکارِ عالمﷺ اصل میں ہے اصلِ دیں
” سیرتِ مختارﷺ سے کردار اچھا کیجئیے”
جب خیالوں میں بسے سرکارﷺ کا جلوہ سدا
پھر کسی نہ غیر کو اک پل بھی دیکھا کیجئیے
جان دی جائے نبیﷺ کے نام اور ناموس پر
آئیے اللہ سے اک یہ بھی سودا کیجئیے
جب کبھی ناموسِ آقاﷺ پر اٹھے کوئی سوال
پھر نہ ہر گز سوچئیے جاں انﷺ پہ وارا کہجئیے
روکھی سوکھی کھا کے بھی غزوات میں ھصہ لیا
جس طرح آقاﷺ نے کاٹی ، یوں گزارا کیجئیے
اے ریاض احمد نبیﷺ کی زندگی سب سے حسیں
اپنی ساری زندگی بس اس کا جلوہ کیجئیے

ریاض احمد قادری
نعت شریف 4
اس طریقے سے بھی سنت کا اعادہ کیجئیے
پیڑ رستے میں لگائیں اور سایہ کیجئیے
جس طرح کی سادگی اپنائی ہے سرکارﷺ نے
آپ اپنی زندگی کو اتنا سادہ کیجئیے
زیست سب کی سب ہی اک اقرار ہے ایمان کا
اپنے خالق سے ہر اک لمحہ ہی وعدہ کیجئیے
تو بہ استغفار ہی بنیاد ہے اصلاح کی
اس لئیے اپنے گناہوں ہی سے توبہ کیجئیے
سیرتِ شاہِ زمنﷺ ہے دائمی راہِ نجات
” سیرتِ مختار ﷺ سے کردار اچھا کیجئیے”
آپﷺ نے سب دشمنوں سے بھی کیا ہے درگذر
کر لے گر کوئی برا اس سے بھی اچھا کیجئیے
اے ریاضؔ احمد بلا لیں گے تمہیں دربار پر
تم سے بس اتنا تقاضا ہے ارادہ کیجئیے

ریاض احمد قادری
نعت شریف 5
اب ہمیشہ مدحتِ شہﷺ کا ارادہ کیجئیے
اور پھر انﷺ کی عطائوں کا برسنا دیکھئیے
اول آخر پڑھنا ہے صل ِ علیٰ ہی آپ نے
اور پھر رنگِ عطا اپنی دعا کا دیکھئیے
گر ضرورت ہے تمہیں اصلاح کی اک راہ کی
” سیرتِ مختارﷺ سے کردار اچھا کیجئیے ”
واں جنیدؒ و بایزیدؒ آتے ہیں سر کے بل سدا
باادب ہو کر ہمیشہ واں پہ جایا کیجئیے
دستگیری آپﷺ کی معلوم ہے تسلیم ہے
جب کوئی مشکل ہو انﷺ کو پاس پایا کیجئیے
سب سکندر ہیں گدائے سرورِ کون ومکاں ﷺ
جاکے طیبہ میں مقدر آزمایا کیجئیے
شافعِ محشرﷺ ہی شافع ہیں ہمارے بھی ریاضؔ
حشر میں انﷺ کی شفاعت پر بھروسہ کیجئیے

ریاض احمد قادری
نعت شریف 6
مدحتِ سرکارﷺ سے جگ میں اجالا کیجئیے
اور سب صلِ علیٰ سے دور اندھیرا کیجئیے
ظلمتیں کافور ہوتی ہیں نبیﷺ کے نام سے
نام انﷺ کا جپ کے باطن میں سویرا کیجئیے
جب فدا ہونا ہے انﷺ کے نام پر ہوجا فدا
اس طریقے سے ہی اب ایمان تازہ کیجئیے
جب مدینے جائیے بالکل فنا ہو جائیے
آپﷺ کے دربار میں مت میرا تیراکیجئیے
آپﷺ کا کردار ہی تو شرحِ قراں بے شبہ
“سیرتِ مختارﷺ سے کردار اچھا کیجئیے”
کیا ضرورت جھوٹ لکھیں اور بس غزلیں کہیں
نعت لکھ کر شعر کا ارمان پورا کیجئیے
مل ہی جائے گا وہیں سے تم کو بھی گو ہر ریاضؔ
آپ بھی اس درپہ جانے والا چارہ کیجئیے

ریاض احمد قادری
نعت شریف7
اس نکمی زندگی کو ایسے اعلی کیجئے
“سیرتِ مختار سے کردار اچھا کیجئے ”
حالتِ امت ہوئی سرکارﷺ دنیا میں خراب
اپنے جلووں سے اسے دنیا میں اچھا کیجئے
گر خدا کی ذات کا عرفان بھی درکار ہے
سیرتِ سرکارﷺ کوہر لمحہ سوچا کیجئے
جگمگا اٹھے گا بختِ تیرہ تاریک بھی
زندگی میں ہر گھڑی آقاﷺ کا چرچا کیجئے
آنے والی نسلیں بھی کہتی رہیں یا مصطفیٰﷺ
اس طریقے سے انہیں آقاﷺ کا شیدا کیجئے
نعت لکھنا بھی عبادت ہے یہی سب سے کہو
شاعروں سے ہے گذارش نعت لکھا کیجئیے
زندگی تھوڑی ہے انﷺ کے ذکر کی خاطر ریاضؔ
تذکرہ آقاﷺ کا زیادہ سے زیادہ کیجئیے

ریاض احمد قادری
نعت شریف 8
اس طرح سے زندگی جگ میں گزارا کیجئیے
“سیرت مختار ﷺسے کردار اچھا کیجئے”
اسوہ ءِ حسنہ نمونہ ہے ہمارے واسطے
زندگی کو ڈھال کراسوہ میں اعلیٰ کیجئے
مت کسی کے سامنے اب ہاتھ بھی پھیلائیے
خود کو بس انﷺ کے دوارے ہی کا منگتا کیجئیے
آپ ﷺ کا اخلاق ہی قرآن کی تفسیر ہے
روشنی میں اس کی اب اخلاق اچھاکیجئے
سنتِ سرکارﷺ ٹھہری بخششوں کا راستہ
اس لئیے سرکارﷺ کی سنت کو زندہ کیجئے
انﷺ کے روضے کاتصور ہے حضوری روح کی
روح کی آنکھوں سے ہی روضے کا جلوہ کیجئے
خواب میں انﷺ کی زیارت آپ کی قسمت بنے
ہر گھڑی صلِ علیٰ ہی کا وظیفہ کیجئے
اس طریقے سے رسالت اور وحدت ہی ملے
انﷺ کی الفت دل میں رکھ کر رب کو سجدہ کیجئے

ریاض احمد قادری
نعت شریف 9
اپنے باطن کی شبوں میں یوں سویرا کیجئے
اسمِ سرکارِ دوعالم ﷺ سے اجالا کیجئے
خالقِ اکبر نے انﷺ کو بھیج کر احساں کیا
خالقِ اکبر کی اس نعمت کا چرچا کیجئے
عشقِ سرکارِ دوعالم ﷺ کی یہی پہچان ہے
” سیرت مختارﷺسے کردار اچھا کیجئے ”
اس طریقے سے بسے وہ در تمہاری جان میں
ہر جگہ سے ہر گھڑی روضے کا جلوہ کیجئے
کتنی مدت سے رہی ہے آرزو اس روز کی
ان کا روضہ آ گیا عرض تمنا کیجئے
نسلِ نو کو بھی پڑھائیں واقعات ِصطفیٰﷺ
سیرتِ سرکارﷺ کا خود بھی شیدا کیجئیے
حاضری اس در کی بھی اتنی ضروری ہے ریاضؔ
روضے پر بھی جائیے جب حج و عمرہ کیجئیے

ریاض احمد قادری
نعت شریف 10
آپﷺ کے گستاخ کودنیا میں تنہا کیجئے
اس طرح آقاﷺ سے اپنا عشق پختہ کیجئے
پوری امت کے لئے جو باعثِ اعزاز ہو
مومنانِ دہر جگ میں کام ایسا کیجئے
عاشقانِ مصطفیٰﷺ کی ایسے ہوں دھومیں مچی
” سیرت مختار ﷺ سے کردار اچھا کیجئے ”
اس طرح اقوال اور افعال ہوں سنورے ہوئے
عشقِ یوں سرکارﷺ سے ہر لمحہ سچا کیجئیے
اپنی ناکامی پہ گر ہے آپ کو شرمندگی
رہنما اس زیست میں آقاؤ کا اسوہ کیجئے
گرمی ءِ محشر کا تم کو گر کوئی احساس ہے
اپنے سرپر آپﷺ کی سیرت کا سایہ کیجئیے
زندگانی دہر کی خاطر نمونہ ہو ریاضؔ
اس کو بس آقاﷺ کی الفت میں گذارا کیجئے

ریاض احمد قادری
نعت شریف 11
دل یہ کہتا ہے مدینے میں ٹھکانہ کیجئے
پیارے آقاﷺ اس لئے اسباب پیدا کیجئے
ھُرمتِ سرکارﷺ ہی ایمان کی بنیاد ہے
زندگی سرکارﷺ کی حُرمت پہ صدقہ کیجئے
دیکھنے انوار ہیں گر جیتے جی اس ذات کے
انﷺ کی خاکِ پا کو پھر آنکھوں کا سرمہ کیجئے
قبر میں بھی آپ ہی کا م آئے گا درود
اس لئے دن رات بس اس کا وظیفہ کیجئے
حشر میں بھی آپ کا کردار ہی کام آئے گا
“سیرت مختار ﷺ سے کردار اچھا کیجئے”
حبِ سرکارِ دوعالمﷺ شرط ہے ایمان کی
عشقِ احمدﷺ سے سدا ایمان تازہ کیجئے
مدحتِ سرکارﷺ ہی پہچان ہو اپنی ریاضؔ
اس لئے صبح و مسا بس مدحِ آقاﷺ کیجئیے

ریاض احمد قادری
نعت شریف 12
سرورِ دیںﷺ سے تعلق اپنا پختہ کیجئے
اس طرح کفار کو جگ میں نکما کیجئے
عشقِ سرکارِ دوعالم ﷺ آپ کی پہچان ہو
عشق، احمدﷺ ہی کو سب اپنا عقیدہ کیجئے
رب یہ کہتا ہے پڑھو صلِ علیٰ سرکارﷺ پر
رب سے مل کر آپ سارے یہ وظیفہ کیجئے
ختم ہوتی ہی نہیں ہے زیست کی مصروفیت
جا کے طیبہ میں درِ آقاﷺ پہ بیٹھا کیجئے
امتِ مرحوم کے حالات ابتر ہیں حضورﷺ!
اپنی اک نظرِ کرم سے ان کو اچھا کیجئے
اتحادِ ملتِ اسلام ہے اپنی نجات
طاعتِ سرکارﷺ میں اس کو اکٹھا کیجئیے
ہر گھڑی انﷺ کی محبت میں گزاریں گے ریاضؔ
آج اپنے آپ سے سب لوگ وعدہ کیجئیے

ریاض احمد قادری
نعت شریف13
جب کبھی اصلاح کا اپنی ارادہ کیجئیے
سیرتِ سرکارﷺ ہی سے استفادہ کیجئیے
راستے جتنے بھی ہوں اور منزلیں جتنی بھی ہوں
آپ بس سرکارﷺ کے روضے کو جادہ کیجئیے
قول و اقرارِ لسان و قلب لازم ہے سدا
آپﷺ پر ایمان کا ہردم اعادہ کیجئیے
نعت خوانی ، نعت گوئی بھی ضروری ہے مگر
انﷺ پہ اپنی جان دینے کا بھی وعدہ کیجئیے
پڑھ کے سب صلِ علیٰ اورپیارے آقاﷺ پر درود
بخت میں اپنے سبھی کوثر کا بادہ کیجئیے
کم سے کم الفت بہت ہی کم ہے اب اس دہر میں
سرورِ دیںﷺ سے محبت اور زیادہ کیجئیے
اے ریاضؔ عشقِ نبیﷺ کا یہ تقاضا بھی تو ہے
جگ میں اپنی زندگی سادہ سے سادہ کیجئیے

ریاض احمد قادری
نعت شریف 14
اپنےدل کومدحتِ آقاﷺ کا رسیا کیجئے
زندگی میں رات دن بس نعت لکھا کیجئیے
چاہتے ہواپنی بخشش حشر میں تو دہر میں
” سیرت مختار سے کردار اچھا کیجئے ”
قبر میں انوار کی خواہش ہے دل میں آپ کے
زندگی میں پھر درودوں سے سویرا کیجئے
اسوہ ءِ سرکارِ عالم ﷺ روشنی ہی روشنی
اسوۂ سرکارﷺ کا ہر جا اجالا کیجئے
نعرۂ تکبیر کی اک دلربا آواز سے
دشمنِ دینِ نبیﷺ کو جگ میں پسپا کیجئے
چاہتے ہودائم و جاوید اپنی زندگی
انﷺ کی خاطراپنے جان و دل کو وارا کیجئے
اس جگہ پر عاجزی ہی سرفرازی ہے ریاضؔ
انﷺ کے در پہ سرجھکا کر خودکو اونچا کیجئے

ریاض احمد قادری
نعت شریف 15
زندگی انﷺ کی محبت میں گزارا کیجئیے
اورپھر اللہ سے انعام پایا کیجئیے
کرکے اپنی زندگانی میں اسے نافذ سدا
سنتِ سرکارﷺ کو ہرروز زندہ کیجئیے
حرمت و ناموسِ آقاﷺ پر اسے کر کے فدا
اپنی ادنیٰ زندگی کو ایسے اعلیٰ کیجئیے
ہر شبِ ظلمت کی لازم ہے سحر ہونا ابھی
اپنے نیک اعمال سے اس میں سویرا کیجئیے
ہر ملاوٹ جرم سمجھو اپنے دین اسلام میں
تولنا ہے آپ نے تو پورا تولا کیجئیے
جو بھی دکھی رورہا ہے اس کو دے دو حوصلہ
ہے تقاضا دین کا کہ آنسو پونچھا کیجئیے
لے کے نامِ مصطفیٰ ﷺ ہرروز اور ہر شب ریاضؔ
جو وبائیں آگئی ہیں ان کو ٹالا کیجئیے

ریاض احمد قادری
نعت شریف 16
خوبیاں خود میں صحابہ والی پیدا کیجئے
اور انﷺ کے عشق کا پھر بھی نہ دعویٰ کیجیے
ہے تقاضا دین کا راہِ خدا میں دیجئیے
اور خدا کے نام پر کچھ مال صدقہ کیجئیے
طالبِ دیدارِ مولا کے لئے لازم ہے یہ
اپنے من میں جھانک کر آقاﷺ کو دیکھاکیجئیے
سجدہ لازم ہے فقط ذاتِ خدا کے واسطے
اور کسی بھی غیر کو ہرگز نہ سجدہ کیجئیے
جھوٹ جچتا ہی نہیں ہے مومنوں کے واسطے
معاملاتِ زندگی میں خود کو سچا کیجیے
آرزو ہے جائوں دربارِ نبیﷺ میں ایک دن
اے مرے مولا مری پوری تمنا کیجئیے
شانِ سرکارِ دوعالم ﷺ میں ثنا لکھیں ریاضؔ
اور پھر سرکارﷺ کے روضے پہ ہدیہ کیجئے

ریاض احمد قادری
نعت شریف 17
خواہشِ مکہ ، تمنائے مدینہ کیجئیے
اس طرح سے اپنا دین ایمان پورا کیجئیے
دوسرے بھی دہر میں دیتے رہیں اس کی مثال
” سیرتِ مختارﷺ سے کردار اچھا کیجئیے”
شافعِ محشر ہمارے ہیں رسولِ دوسراﷺ
اس لئے کہتا ہوں کیوں پھر فکرِ عقبیٰ کیجئیے
خود بھی چلتے جائیے سرکارﷺ کے اسوہ پہ ہی
دوسروں کو آپﷺ کا رستہ بتایا کیجئیے
وار کر اس جان کو ناموس آقاﷺ پر سدا
اپنے ہی ایمان کا پورا تقاضا کیجئیے
اس سے ہی مل پائے گی منزل دنیوی اخروی
راہبر ہر راہ میں آقاﷺ کا اسوہ کیجئیے
آئے چوکھٹ پر تری جو بن کے سائل یہ ریاضؔ
پھر سے اس پہ چشمِ رحمت شاہِ بطحا کیجئیے

ریاض احمد قادری
نعت شریف18
اپنے رب سے حاضری طیبہ کی مانگا کیجئیے
یوں دلِ ویران میں آباد طیبہ کیجئیے
جس میں ہیں آرام فرما سرورِ کون و مکاںﷺ
سامنے آنکھوں کے اس روضہ کو رکھا کیجئیے
نعت آقاﷺ کی خوشی کے واسطے لکھتے رہو
جب کبھی ہو حاضری پھر نذرِ آقاﷺ کیجئیے
سید و سرورﷺ کی الفت دین کی بنیاد ہے
بات اتنی دوسروں کو بھی بتایا کیجئیے
بانٹ کر اپنی خوشی معذور میں مجبور میں
اس طرح سے ہر کسی دل میں بسیرا کیجئیے
اپنے دل میں علم کی دولت سمو کر ہی ریاضؔ
دشمن ِ اسلام کو ہراک جا پسپاکیجئیے

ریاض احمد قادری
نعت شریف 19
پڑ ھ کے سب صلِ علیٰ من میں اجالا کیجئیے
اور تصور میں نبیﷺ کا روضہ رکھا کیجئیے
بیوہ و مسکین کا بن کر سہارا دہر میں
اس طریقے سے مدینے میں بسیرا کیجئیے
اپنے ہمسائے کا بھی بن کر سہارا ہر گھڑی
سرورِ کون و مکاںﷺ کا پورا اسوہ کیجئیے
خود کمانا خوب ہے اور کھانا بھی تو خوب ہے
دوسروں میں بھی تو کچھ خیرات بانٹا کیجئیے
پڑھنا ہی کافی نہیں ہے ہو عمل بھی کچھ ذرا
” سیرتِ مختارﷺ سے کردار اچھا کیجئیے ”
میرے پیارے مصطفیٰﷺ نے اس کی ہے تعلیم دی
دخترِ دشمن کے سر پر بھی تو پردہ کیجئیے
ہر دعا ہو جائے گی پوری خدا کے ہاں ریاضؔ
بس درودِ پاکﷺ کو اس کا وسیلہ کیجئیے

ریاض احمد قادری
نعت شریف 20
ذکرِ آقاﷺ کیجئیے، ذکرِ مدینہ کیجئیے
اس طرح صلِ علیٰ کا ورد پورا کیجئیے
مختصر سی زندگی کے سارے معمولات میں
سامنے اپنے ہمیشہ اسوہ رکھا کیجئیے
تولئیے بھی پورا پورا دائمی انصاف سے
اور کسی بھی بے نوا کا حق نہ مارا کیجئیے
سرورِ کون و مکاں ﷺ نے ہے یہی تعلیم دی
جو پکے گھر میں وہ ہمسائے کو بھیجا کیجئیے
کہتا ہے مسعودؔ ہم سے بہتریں الفاظ میں
” سیرتِ مختارﷺ سے کردار اچھا کیجئیے”
جان وارو سرورِ دین اور دنیا ﷺ کے لئیے
اور اپنا دل بھی انﷺ کے در پہ ہدیہ کیجئیے
مدحتِ سرکارﷺ بھی اعلیٰ عبادت ہے ریاض ؔ
اسوہ ءِ سرکارﷺ بھی دل میں سمویا کیجئیے

ریاض احمد قادری
نعت شریف 21
حبِ شاہِ دینﷺ کو اپنا وطیرہ کیجئیے
اور اپنی زندگی ایسے گذارا کیجئیے
روشنی نکلے گی دل سے آزما کر دیکھ لیں
اس کو حبِ مصطفیٰﷺ کا آئینہ سا کیجئے
پڑھ کے شاہِ دینﷺ پر صبح و مسا صلِ علیٰ
جنتِ دارین پر پھر اپنا دعویٰ کیجئیے
حرمتِ و تحریمِ احمدﷺ دین کی بنیاد ہے
اس کی خاطر جان دے کر دین پورا کیجئیے
کھینچ لیں گدی سے ہی گستاخ لوگوں کی زباں
جو کریں توہینِ آقاﷺ ان کو رسواکیجئیے
جان دیتے ہی رہے ہیں آقاﷺ پر اصحاب سب
جان دے کر انﷺ پہ تقلیدِ صحابہ کیجئیے
کہہ دیا مسعودؔ نے یہ کتنا اچھا ہے ریاضؔ
” سیرتِ مختارﷺ سے کردار اچھا کیجئیے

ریاض احمد قادری
نعت شریف 22
اپنے دل کو انﷺ کی الفت سے شناسا کیجئیے
عشق کرنا ہے نبیﷺ سے تو سراپا کیجئیے
وار دو اپنی جوانی سرورِ کونین ﷺ پر
اور ان کی نذر اپنا سب بڑھاپا کیجئیے
نعت میں ہربات ہی ہو مستند اور متفق
بات کوئی بھی نہیں اب بے سروپا کیجئیے
دولتِ دارین ، مال و زر ملااس در سے ہی
اس لئے سرکارﷺ کی خاطر یہ ہدیہ کیجئیے
سرورِ کون و مکاں ﷺ کا دور ہے سب سے حسیں
آج اپنے حال کو اس دور جیسا کیجئیے
کتنا اعلیٰ مصرع ہم کو دے دیا مسعودؔ نے
” سیرتِ مختارﷺ سے کردار اچھا کیجئیے ”
بڑھ گئے کفار مومن سے ہیں کیوں آگے ریاضؔ
ڈال کر منہ کو گریباں میں یہ سوچا کیجئیے

ریاض احمد قادری
نعت شریف 23
آمنہ کے لعل ﷺ ہی سے عشق سچا کیجئیے
سنتِ حضرت ابوطالب کو پورا کیجئیے
آج کے اس دور کا واحد تقاضا ہے یہی
“سیرتِ مختار ﷺسے کردار اچھا کیجیے”
یہ بھی تو اک صدقہ ہے خیرات ہے ہدیہ بھی ہے
دیکھ کر مومن کی صورت مسکرایا کیجئیے
غار میں جانا بھی اک سنت ہے شاہِ دین ﷺ کی
اس لئے کچھ لمحے غاروں میں گذارا کیجئیے
خود خدا اس کے ملائک پڑھتے ہیں انﷺ پر درود
اس لئیے انﷺ پر درودِ پاک بھیجا کیجیے
خود بخود ہی حاضری کا بن ہی جائے گا سبب
آپ اپنی حاضری کا کچھ ارادہ کیجئیے
آپ جب سنوریں گے دنیا بھی سنور جائے ریاضؔ
اس لئے خود کو ہمیشہ ہی سنوارا کیجئیے

ریاض احمد قادری
نعت شریف 24
نورِ وحدت سے سدا باطن کو اجلا کیجئیے
شرک کی ظلمت سے مت اس کو بھی میلا کیجئیے
مت کوئی بھی منفعت دنیا کی وابستہ کریں
ہر عدوئے سرورِ دیں ﷺ سے کنارہ کیجئیے
پائو گے اس سے دنیوی اخروی دائم نجات
” سیرتِ مختارﷺ سے کردار اچھا کیجئیے”
ہوگئے اغیار کی نظروں میں ہیں مسلم ذلیل
چھوڑ کر اسوہ کو خود کو یوں نہ رسوا کیجئیے
ہوگئی دنیا میں رسوا آپﷺ کی امت حضورﷺ!
اب تو اس کی ذلتوں کا کچھ مداوا کیجئیے
تفرقہ بازی سے ہیں سب مستفید اپنے عدو
ان کی ناکامی کو اس ملت کو یکجا کیجئیے
زیست کی شب میں ثنا ہے نور کا منبع ریاضؔ
اس کے اک اک شعر سے پل پل اجالا کیجئیے

ریاض احمد قادری
نعت شریف 25
آپﷺ کا میلاد بڑھ چڑھ کر منایا کیجئیے
پورا ایسے عشق کا کچھ تو تقاضا کیجئیے
آپ کی گفتار اچھی خود بخود ہو جائے گی
” سیرتِ مختارﷺ سے کردار اچھا کیجئیے”
ہر جمعہ کو غسل کی سنت کو بھی پورا کریں
آپﷺ کی تقلیدمیں خوشبو لگایا کیجئیے
نعت بھی صلِ علیٰ کا روپ ہے اس دہر میں
نعت سنئیے دوسروں کو بھی سنایا کیجئیے
نعت کی اصلاح بھی سنت ہے اک سرکارﷺ کی
کرکے اصلاحِ ثنا سنت کو پورا کیجئیے
نعت خوانی کو بنائو مت کمرشل دوستو
رزق کی خاطر تو کاروبارِ دنیا کیجئیے
آپ کا بھی بول بالا ہو ہی جائے گا ریاضؔ
آپ ہردم مصطفیٰ ﷺ کا بول بالا کیجئیے

ریاض احمد قادری
نعت شریف 26
انﷺ کی سنت میں سدا پانی پلایا کیجئیے
کوئی جب بھوکا ملے کھانا کھلایا کیجئیے
حبِ شاہِ دین و دنیاﷺ کی یہی تاکید ہے
” سیرتِ مختارﷺ سے کردار اچھا کیجئیے”
متحد اور متفق رہنا ہے مل کر مومنو!
دشمنوں کی چال میں ہرگز نہ آیا کیجئیے
جو ملے سرکارﷺ کے در سے غنیمت ہے وہی
جب ملے کچھ بھی نہیں پھر رب پہ تقویٰ کیجئیے
بھر ہی دیں گے آپ ﷺ دامن آپ کا خیرات سے
سرورِ حقﷺ کی عطائوں پر بھروسہ کیجئیے
بولنا لازم نہیں ہے آپﷺ کو معلوم ہے
اس جگہ خاموش رہ کر ہی نظارہ کیجئیے
ابرھہ جب بھی بڑھے کعبہ کی جانب اے ریاض ؔ
پھر ابابیلوں کا کوئی روپ دھارا کیجئیے

ریاض احمد قادری
نعت شریف 27
دل کو سوئے روضہ ءِ آقاﷺ روانہ کیجئیے
یوں حقیقت زیست کا اپنی فسانہ کیجئیے
فارسی کہتے ہو جن کو ، جن کو کہتے ہو بلال
عشق انﷺ سے مثل ان کی والہانہ کیجئیے
حرمتِ شانِ رسالت کا ہو جب موقع کوئی
جاں بچانے کا نہ پھر کوئی بہانہ کیجئیے
سنتِ سرکارﷺ پر کر کے عمل اس دہر میں
کام کوئی کیجئیے تو عاشقانہ کیجئیے
رکھتے ہیں پرواز میں بھی روضے پر اپنی نظر
طیبہ میں جا کر یہ شغلِ طائرانہ کیجئیے
نعت لکھئے حضرت حسان کی تقلید میں
اس طرح سے عشق انﷺ سے شاعرانہ کیجئیے
مانگئے طیبہ میں جاکر روضے پر دل کی مراد
اے ریاضؔ اس طور کارِ عاجزانہ کیجئیے

ریاض احمد قادری
نعت شریف 28
جان اپنی نام ِسرکارِ جہاں ﷺ پر دیجئیے
اور پھر اس کی جزا بھی اپنے رب سے لیجئیے
اک یہی رستہ ہے دنیا میں فلاح و فوز کا
” سیرتِ مختارﷺ سے کردار اچھا کیجئیے ”
عشقِ سرکارِ دوعالم ﷺ کو بنا لو حرزِ جاں
اور محشر میں انہی سے جامِ کو ثر پیجئیے
جان واری ہے جنہوں نے حُرمتِ سرکارﷺ پر
بعد مرنے کے بھی دنیا میں وہ عاشق ہی جئیے
اس قرینے سے بنائو دہر کو دارالامن
آپ کا دشمن جئیے اور آپ کا ساتھی جئیے
خود بھی کھائیں سیرتِ سرکارﷺ پر کر کے عمل
اور بچے جو کچھ اسے مسکین کو دے دیجئیے
اس طرح سے ہو رواداری مسالک میں ریاضؔ
آپ بھی جیتے رہیں اوربھائی مومن بھی جئیے

ریاض احمد قادری
نعت شریف 29
الفتِ مختارﷺ سے کردار اچھا کیجئیے
“سیرت ِ مختارﷺ سے کردار اچھا کیجئیے”
نعت گوئی آپ کی کردار سازی کرتی ہے
مدحتِ مختارﷺ سے کردار اچھا کیجئیے
ان ﷺ کی نسبت آپ کو جنت میں لے کے جائے گی
نسبتِ مختارﷺ سے کردار اچھا کیجئیے
انﷺ کی ہمت سے ہے پھیلا دینِ حق ہر اک جگہ
ہمتِ مختارﷺ سے کردار اچھا کیجئیے
ریزہ ریزہ سب چٹانیں ہو گئیں اک ضرب سے
قوتِ مختارﷺ سے کردار اچھا کیجئیے
ان ﷺ سی صورت لے کے دنیا میں کوئی آیا نہیں
صورتِ مختارﷺ سے کردار اچھا کیجئیے
ان ﷺ کی عظمت کا زمانہ معترف ہے اے ریاض ؔ
عظمتِ مختارﷺ سے کردار اچھا کیجئیے

ریاض احمد قادری
نعت شریف 30
طاعتِ سردارﷺ سے کردار اچھا کیجئیے
” سیرتِ مختارسے کردار اچھا کیجئیے ”
آپﷺنے جو کچھ کہا وہ حکمِ ربی سے کہا
آپﷺ کی گفتار سے کردار اچھا کیجئیے
آپﷺکی رفتار میں تھی استقامت اور وقار
آپﷺ کی رفتار سے کردار اچھا کیجئیے
چاند تارے اور سورج کہکشاں ہیں فیض یاب
آپﷺ کے انوار سے کردار اچھا کیجئیے
آپﷺ کا ہر اک صحابی خُلق کا شہکار ہے
انﷺ کے ہر شہکار سے کردار اچھا کیجئیے
دیکھئیے دربار انﷺ کا اور سنور تے جائیے
آپﷺ کے دربار سے کردار اچھا کیجئیے
ہر طریقہ آپﷺ کا ہے شرحِ قرآنی ریاض ؔ
آپﷺ کے اطوار سے کردار اچھا کیجئیے

ریاض احمد قادری
نعت شریف 31
اس سے اپنے آپ کو ہربار اچھا کیجئیے
” سیرتِ مختارﷺ سے کرداراچھا کیجئیے ”
طور و اطوارِ رسولِ دوسراﷺ دائم نجات
ان سے اپنا رستہ اطوار اچھا کیجئیے
آپﷺ تاجر بھی ہیں اور سب سے بڑے ایمان دار
دیکھ کر انﷺ کو ہی کاروبار اچھا کیجئیے
آپﷺ نے بتلایا ہم کو کس طرح کے شہر ہوں
گھر بھی اچھا کیجئیے ، بازار اچھا کیجئیے
آپﷺ جب بھی بولتے تھے کتنا شستہ بولتے
آپ بھی پھر لہجہ ءِ گفتار اچھا کیجئیے
آپﷺ نے چل کے دکھایا خوبرو رفتارسے
اس سے اپنا سلسلہ رفتار اچھا کیجئیے
سیرتِ مختارﷺ ہی ہے رہنما ہرجا ریاض ؔ
شہر اچھا کیجئیے سنسار اچھا کیجئیے

ریاض احمد قادری
نعت شریف (گرہ بند) 32
اک دفعہ کافی نہیں سوبار اچھا کیجئیے
” سیرت ِ مختارﷺ سے کردار اچھا کیجئیے ”
پڑھ کے سیرت اپنا کاروبار اچھا کیجئیے
” سیرت ِ مختارﷺ سے کردار اچھا کیجئیے ”
کرکے میلادِ نبیﷺ گھربار اچھا کیجئیے
” سیرت ِ مختارﷺ سے کردار اچھا کیجئیے ”
غیر اچھا کیجئیے اور یار اچھا کیجئیے
” سیرت ِ مختارﷺ سے کردار اچھا کیجئیے ”
منزلِ ہستی کا ہر رہوار اچھا کیجئیے
” سیرت ِ مختارﷺ سے کردار اچھا کیجئیے ”
نعت کا گل دستہ ءِ اشعار اچھا کیجئیے
” سیرت ِ مختارﷺ سے کردار اچھا کیجئیے ”
اے ریاضؔ اس دیس کا فنکار اچھا کیجئیے
” سیرت ِ مختارﷺ سے کردار اچھا کیجئیے ”

ریاض احمد قادری
نعت شریف33
اس کو اپنی زندگی میں ہر جگہ اپنائیے
” سیرتِ مختار ﷺ سے کردار اچھا کیجئیے ”
انﷺ کی سیرت پاک کو پہلو بہ پہلو دیکھئیے
” سیرتِ مختار ﷺ سے کردار اچھا کیجئیے ”
انﷺ کو مانیں اور جگ میں معتبر ہو جائیے
” سیرتِ مختار ﷺ سے کردار اچھا کیجئیے ”
عشقِ سرکارِ دوعالم ﷺ کا صلہ بھی پائیے
” سیرتِ مختار ﷺ سے کردار اچھا کیجئیے ”
روشنی کے ساتھ رہئیے روشنی ہو جائیے
” سیرتِ مختار ﷺ سے کردار اچھا کیجئیے ”
نعتِ سرکارِ دوعالمﷺ ہی ہمیشہ گائیے
” سیرتِ مختار ﷺ سے کردار اچھا کیجئیے ”
طیبہ میں جانا ہے تو واپس نہ مڑ کے آئیے
” سیرتِ مختار ﷺ سے کردار اچھا کیجئیے ”

ریاض احمد قادری
نعت شریف 34
اعلیٰ سے اعلیٰ ہر اک عمدہ سے عمدہ کیجئیے
” سیرتِ مختارﷺ سے کردار اچھا کیجئیے”
نعت لکھئیے، نعت پڑھئیے ، اوروں سے لکھوائیے
کام ایسا ہے کہ اب اس کو روزانہ کیجئیے
سنتے ہیں صلِ علیٰ اور نعتیہ اشعار کو
نعت لکھ کر سوئے طیبہ ہی روانہ کیجئیے
نیکی کرنی ہے تو کر کے بھول جائیں اس کو بھی
اور گر احسان ہے مت ذکر اس کا کیجئیے
کامیابی گر ملے اللہ ہی کا نام لو
اور ناکامی ہے گر تو ذکر اپنا کیجئیے
ایک انساں کی حفاظت ہے ہر اک انسان کی
خدمتِ انسان سے راضی قبیلہ کیجئیے
نعتِ سرکارِ دوعالم ﷺ ہی سدا لکھ کر ریاضؔ
شاعری میں روشن اپنا یوں حوالہ کیجئیے

ریاض احمد قادری
نعت شریف 35
حمد پڑھنی ہے تو رخ کو سوئے کعبہ کیجئیے
نعت پڑھنی ہے تو رخ کو سوئے طیبہ کیجئیے
سرورِ کون و مکاںﷺ کی ذات ہی محور رہے
اور انہی کو اپنی سوچوں کا بھی قبلہ کیجئیے
ہر کسی کو ہے ضرورت رحمتِ سرکارﷺ کی
آپ ﷺ کا میلاد بھی اب کوچہ کوچہ کیجئیے
سب دلوں پر ہے حکومت جس دلوں کے شاہ ﷺ کی
تذکرہ اس شاہﷺ کا اب خطہ خطہ کیجئیے
روشنی گر خلوت و جلوت کی اب درکار ہے
اپنے باطن میں منور انﷺ کا روضہ کیجئیے
مدحتِ شاہِ اممﷺ ہو قافیہ در قافیہ
اور توصیفِ نبیﷺ تو مصرعہ مصرعہ کیجئیے
مقطع بھی توصیف کاکامل نمونہ ہو ریاضؔ
اور مدحِ شاہﷺ سے آغازِ مطلع کیجئیے
ریاض احمد قادری

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں