اونٹ، بیل ، بکرے کی قیمتوں میں ہوشربا اضافہ ، عوام میں خریداری کی سکت نہ رہی؟؟

فیصل آباد(آن لائن)

اونٹ بیل بکرے کی قیمتوں میں اضافہ،مہنگائی کا طوفان، حکومت مہنگائی کو کنٹرول کرنے میں مکمل طور ناکام، گذشتہ سال ایک لاکھ روپے والا بیل اس سال ایک لاکھ 50ہزار روپے جبکہ 30ہزار روپے والابکرا 40ہزار روپے ہوگیا خریداری نہ ہونے کے برابر، جبکہ مویشی منڈی کی انتظامیہ الگ سے لوٹ رہی ، بلب کاکرایہ 100روپے روزانہ،جا نوروں کیلئے پانی کا پانچ سو روپے روزانہ ادا کرنا پڑتا ہے اور ایک کینال زمین کا کرایہ ایک لاکھ روپے وصول کیا گیا ہے-

آن لائن کے مطابق ضلع فیصل آباد میں جانوروں کی خریداری کیلئے دو درجن کے قریب مویشی منڈیاں قائم کئی گئی ہیں اگر اتوار تک خریداری عروج پر نہ پہنچی تو کروڑوں روپے کا نقصان ہوسکتا ہے،بیوپاری اپنی پریشانیاں بتا رہے ہیں اور خریدار الگ پریشان ہیں موجودہ حکومت مہنگائی کو کنٹرول کرنے میں ناکام ہے جس کی وجہ سے ہر چیز مہنگی ہوچکی ہے، بڑے جانوروں کے بیوپاری گذشتہ سال کی نسبت خریداروں سے5000روپے زائد پیسے طلب کر رہے ہیں، اسطرح گذشتہ سال ایک لاکھ روپے والا بیل اس سال ایک لاکھ 50ہزار روپے جبکہ 30ہزار روپے والابکرا 40ہزار روپے ہوگیا عید قربان کے دن قریب آرہے ہیں مویشی منڈیوں میں بھی ہر طرف مہنگائی کا طوفان آگیا جس کی وجہ سے اونٹ،بیل،بچھڑا،بکرے کی قیمتوں میں اضافے سے خریداری نہ ہونے کے برابر ہیں دوردرازعلاقوں سے بچوں کے لیے روزی روٹی کمانے کے لیے فیصل آباد آئے ہیں بیوپاری شدید پریشانی کا شکار ہیں،

عید قربان کو چندروز باقی ہیں لیکن منڈیوں میں خریدار نہیں، ٹوبہ،چینوٹ،جھنگ اور دیگر اضلاع سے فیصل آباد منڈی آنے والے بیو پاریوں سے گفتگو کرتے ہوئے انہوں نے بتایا کہ وہ ؎ آٹھ روز سے منڈی میں موجود ہیں، خرچے بہت زیادہ ہیں اب تک صرف ایک بیل فروخت ہوا ہے اور مویشی منڈی کی انتظامیہ الگ سے لوٹ رہی ہے، بلب کاکرایہ 100روپے روزانہ،جا نوروں کیلئے پانی کا پانچ سو روپے روزانہ ادا کرنا پڑتا ہے اور ایک کینال زمین کا کرایہ ایک لاکھ روپے وصول کیا گیا ہے

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں