ریجنل ٹیکس آفس فیصل آباد کا گزشتہ سال 25 فیصد ٹیکس کولیکشن میں اضافہ، اب کیا پلان؟؟

چیف کمشنر ریجنل ٹیکس آفس فیصل آباد سید محمود حسین جعفری نے کہا ہے کہ ریجنل ٹیکس آف فیصل آباد نے مالی سال 2020-21 کے دوران ٹیکس کولیکشن میں پچھلے سال کی نسبت مجموعی طور پر 25فیصد کا اضافہ کیا ہے۔ کاروباری طبقے کی مدد اور کورونا وبا سے پیدا ہونے والے اثرات کو کم کرنے کے لئے اسی سال تقریبا ریکارڈ 42ارب روپے کے سیلز ٹیکس ریفنڈ بھی جاری کئے گئے ہیں۔ جس سے خصوصی طور پر ٹیکسٹائل سیکٹر کو تقویت ملی اور ملکی برآمدات میں خاطر خواہ اضافہ ممکن ہوا۔ وہ ریجنل ٹیکس آفس میں پریس کانفرنس سے خطاب کررہے تھے جبکہ اس موقع پر کمشنر لائل پور اور چناب زون نعیم بابر ، ایڈیشنل کمشنر (ہیڈ کوارٹرز) محمد آصف رفیق اور فوکل پرسن برائے پی او ایس نظام ، ایڈیشنل کمشنر قادر نواز بھی موجود تھے ۔

چیف کمشنر سید محمود حسین جعفری نے کہا کہ ریجنل ٹیکس آفس فیصل آباد نے مالی سال 2020-21 میں نہ صرف کامیابی سے اپنی ٹیکس محصولات کا ہدف مکمل کیا – رواں مالی سال سب سے بڑا ہدف ٹیکس گزاروں کی تعداد کو بڑھانا ، غیر رجسٹرڈ افراد کو ٹیکس نیٹ میں لانااور ریٹیلرز کو ایف بی آر کے خود کار تصدیقی نظام (پوائنٹ آف سیلPOS) کے ساتھ منسلک کرنا ہے۔ غیر رجسٹرڈ افراد اور ٹیکس چوروں کے گرد گھیرا تنگ کیا جا رہا ہے، سوتر منڈی کی غیر رجسٹرڈ سر گرمیوں کے خلاف کریک ڈاؤن اور ان سے منسلک افراد کو ٹیکس نیٹ میں لانے کے لئے بھی اقدامات کئے جا رہے ہیں۔

انہوں نے مزید کہا کہ ایف بی آر کی تاریخ میں پہلی بار یکم جولائی سے ٹیکس گوشواروں کے فارم مہیا کر دیئے گئے ہیں اور اس دفعہ 30 ستمبر کے بعد اس میں کوئی توسیع نہیں کی جائے گی لہٰذا ٹیکس گزاران سے گذارش ہے کہ اپنے گوشوارے جمع کروا کر اس قومی فریضہ کو بروقت سر انجام دیں۔

چیف کمشنر سید محمود حسین جعفری نے یہ بھی واضح کیا کہ ایف بی آر نے چیف کمشنر کو بطور محتسب بھی اپنے فرائض انجام دینے کی ڈیوٹی دی ہوئی ہے اور وہ بطور محتسب بھی اپنے فرائض ادا کر رہے ہیں۔ اس سلسلہ میں ان کا دفتر ہر ٹیکس گزار کے لئے کھلا ہے اور وہ اپنی ہر قسم کی شکایات اور تجاویز کے لئے براہِ راست اُن کے دفتر سے رابطہ کر سکتے ہیں جہاں پر ان کی ہر ممکن مدد کی کوشش کی جائے گی۔ انہوں نے مزید کہا کہ غیر رجسٹرڈ کاروباری افراد اور بجلی پر دیئے گئے رعایتی نرخ کا غلط استعمال کرنے والوں کے خلاف بھرپور کارروائی کی جائے گی اور اس سلسلہ میں کوئی نرمی نہیں برتی جائے گی۔

انہوں نے مزید واضح کیا کہ پرچون فروشوں اور ریٹیلرز کو POS نظام سے منسلک کرنے کے لئے خصوصی ٹاسک فورس تشکیل دے دی گئی ہے اور رجسٹرڈ نہ ہونے والے افراد کے خلاف کارروائی کرتے ہوئے انہیں دس لاکھ روپے تک جرمانہ اور چھ ماہ قید ہو سکتی ہے۔ وزیرِ اعظم عمران خان کے ویژن کے مطابق ایف بی آر کو مزید با صلاحیت اور عوام دوست ادارہ بنانے کے لئے بھرپور اقدامات کئے جا رہے ہیں۔ انہوں نے اس بات پر زور دیا کہ اگر ہر شخص اپنے حصے کا صحیح ٹیکس ادا کرے تو ہم ایک مضبوط اور خوشحال پاکستان بنا سکتے ہیں۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں