جڑانوالہ میں ایکسپائر سیرب پینے سے کمسن بچہ جاں بحق ، محکمہ صحت خاموش تماشائی؟

جڑانوالہ (صابر گھمن سے)

زائد المعیاد سپریپ کے استعمال نے بچے کی جان لے لی،پولیس نے 4 بھائیوں کے خلاف مقدمہ درج کر لیا-

تفصیلات کے مطابق تھانہ کھڑریانوالہ کے نواحی گاؤں چک 229 ر-ب کے رہائشی شہزاد علی ساکن بھٹو کالونی نے پولیس کو بتایا کہ سائل نے اپنے بیٹے حیدر کیلئے رندھاوا کیش اینڈ کیری فارمیسی سے اینٹی بائیوٹنک سپریپ سیفپان 346 روپے میں خرید کیا اور گھر جا کر ایک چمچ سپریپ بچے کو پلا دیا جس کے استعمال سے بچے کی حالت مزید بگڑ گئی اور 3 گھنٹے بعد بچے کی موت واقع ہو گی –

بعدازاں جنازہ کے سائل کے گھر آئے مہمان نے سپریپ چیک کیا جو کہ 6 ماہ قبل ہی اہکسپائر ہوا چکا تھا سائل نے مزید الزام عائد کیا کہ مالکان غیر قانونی طور پر غیر لائینس فارمیسی چلا رہے ہیں اور چند ٹکوں کی خاطر انسانی جانوں سے کھیل رہے ہیں پولیس نے مدعی کی درخواست پر فارمیسی کے مالکان 4 بھائیوں تنویر،وقار، دانش،احتشام کے خلاف مقدمہ درج کر لیا ہے

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں