ڈبلیو ڈبلیو ایف کے اشتراک سے NAMA پراجیکٹ بارے صنعت کاروں سے مشاورتی اجلاس

فیصل آباد ، نیوز ڈیسک

فیصل آباد چیمبر آف کامرس کے صدر عاطف منیر شیخ نے کہا ہے کہ 2023 سے 2025 تک فیصل آباد تیز رفتاری کے ساتھ ترقی کرنے والے شہروں میں شامل ہو گا کیونکہ فیصل آباد کی صنعتی برادری نے جدید ٹیکنالوجی کی حامل مشینری کا استعمال شروع کردیا ہے – مارچ میں ہونیوالی تین روزہ انٹرنیشنل اکنامک کانفرنس کی کامیابی اس کا واضح ثبوت ہے – ڈبلیو ڈبلیو ایف کے اشتراک سے NAMA پراجیکٹ کے حوالے سے صنعت کاروں سے مشاورتی اجلاس سے خطاب کرتے ہوئے انہوں نے کہا کہ ٹیکسٹائل کی صنعت پاکستان کی سب سے بڑی صنعت ہےاوریہ معیشت میں اہم کردار ادا کرتی ہے جس سے پاکستان ہر سال کثیرزرمبادلہ کماتا ہے۔ پاکستان کی برآمدات میں ٹیکسٹائل کا 58فیصد اور شرح نمو کا 8.5 فیصد حصہ ہے اور یہ صنعت پاکستان کے 42 فیصد لوگوں کو روزگار مہیا کرتی ہے۔

انہوں نے کہا کہ NAMA پراجیکٹ ایک بین الاقوامی پروگرام ہے ج س کے تحت ٹیکسٹائل انڈسٹری کے پراسس کے دوران خارج ہونے والے زہریلےمادوں اور گیسوں کو کم کرنے کے ساتھ ساتھ پورے پراسس کو پائیدار بنایا جارہا ہے۔ اس پراجیکٹ کے تحت انڈسٹری میں بجلی کی کھپت کو کم کرنے کے علاوه پیداواری عمل میں استعمال ہونے والے دوسرے وسائل مثلاً پانی، بھاپ اور کیمیکل کی کھپت کو کم کرنے کی کوشش کی جائے گی تاکہ ماحول دوست ٹیکسٹائل مصنوعات کی پیداوار کے عمل کو بروئےکار لایا جا سکے۔

اس موقع پر مقررین کا کہنا تھا کہ اس پراجیکٹ کے مقاصد میں ٹیکسٹائل کی صنعت کے لیے رعایتی قرضہ جات کی فراہمی کو یقینی بنانا ہے تاکہ ٹیکسٹائل انڈسٹری ماحول دوست ٹیکنالوجیز میں سرمایہ کاری کر سکے جس سے بین الاقوامی برانڈز کے معیار کے مطابق CO2 کے اخراج کو کم کیا جا سکے۔ اسی طرح .گرین ہاؤس گیسسز(GHGs (کو کم کرنے کے لیے ٹیکسٹائل کی صنعت کو فنی تربیت فراہم کرنا ہے اس کے ساتھ ساتھ بجلی کی کھپت کو کم کرنے ، پروڈکشن میں استعمال ہونے والے دوسرے وسائل کے بہتر استعمال اور energies renewable ماحول دوست انرجی کو بڑھاوا دینا/promotion کرنا ہے – اسی طرح ملک میں ماحول دوست ٹیکنالوجی کی مارکیٹ کو فروغ دینا ٹیکسٹائل کی صنعت میں کاربن کے اخراج کو کم کرنے کے لیے NAMA پراجیکٹ کے تحت ٹیکسٹائل سیکٹر میں بجلی کی کھپت کم کرنےاور دوسرے وسائل کی کارکردگی کو بہتر کرنے کے لیے رعایتی قرضہ جات اور فنی مشاورت فراہم کی جائے گی- اس موقع پر ڈبلیو ڈبلیو ایف کی جانب سے پراجیکٹ بارے تفصیلی بریفنگ دی گئی-اس موقع پر نیشنل پروڈکیٹوٹی آرگنائزیشن کے سی ای او عالمگیر چوہدری ، لوم کونسل ایسوسی ایشن کے چیئرمین وحید خالق رامے ، پی ایچ ایم اے کے محمد کاشف ضیاء ، محکمہ ماحولیات سے شوکت حیات ، سابق صدر ایف سی سی آئی عاصم خورشید و دیگر بھی موجود تھے جنہوں نے اپنے خیالات کا اظہار کیا-

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں