پی ٹی آئی دور حکومت میں ترقیاتی منصوبوں میں بے قاعدگیوں پر تحقیقات شروع ، کون کون شامل؟؟

فیصل آباد(آن لائن)

تحریک انصاف کے دور حکومت میں فیصل آباد سمیت پنجاب بھر میں ہونےوالے ترقیامی کاموں اور مختلف محکماجات میں کرپشن،ب دعنوانیوں اور بے قائدگیوں پر وفاقی اور صوبائی وزراء سمیت ایم این ایز اور ایم پی ایز کے خلاف بڑے پیمانے تحقیقات شروع ہوگئی ، ممبران اسمبلی کے بیرون ملک فرار ہونے کے منصوبے تیار،جبکہ بعض پی ٹی آئی کے ممبران قومی و صوبائی اسمبلی کے خلاف مقدمات کے اندراج بھی ہونگے –

آن لائن کو معبترذرائع نے بتایا ہے کہ اس سلسلہ میں ایف آئی اے اور انٹی کرپشن کے علاوہ سپیشل برایچ کے اہلکاروں نے معلومات جمع کرنا شروع کردی ہیں ابتدائی طور پر فیصل آباد کےتین ممبران قومی اسمبلی اور سات سے زائد ممبران صوبائی کے بارے میں معلومات اکٹھی کرلی گئی ہیں اس سلسلہ میں محکمہ مال،ایجوکشن،صحت،ریلوے اور دیگر محکموں میں جن وزراء اور ممبران نے میرٹ سے ہٹ کر بھاری رشوت لیکر بھرتیاں کرائی ہیں انکے بھی بارے معلومات حاصل کرلی ہیں علاوہ ازیں گذشتہ ساٹھ تین سال کےدوران فیصل آباد ڈویژن کے جن سرکاری افسران کو سابق حکومت کے وزراء اور ممبران قومی اور صوبائی اسمبلی نے غیر قانونی کام نہ کرنے پر انتقامی کارروائیوں کا نشانہ بناتے ہوئے افسران کو فیصل آباد تبدیل کردیاگیا تھا ابتدائی طور ان فسران سے معلومات اکٹھی کی جاری ہیں ابتدائی طور پر فیصل آباد سے تعلق رکھنے والے جن وزراء اور ممبران قومی وصوبائی اسمبلی کے بارے میں شواہد سامنے آئے ہیں ان میں سابق وفاقی وزیر مملکت میاں فرح حبیب،صوبائی وزیر خیال احمد کاسترو، ایم پی ایزمیاں وارث عزیز،شکیل شاہد،نذر لطیف گجر،ایم این اے فیض اللہ کموہ،خرم شہزاد سمیت دیگر شامل ہیں ان بعض ممبران کی جلد گرفتاریاں بھی متوقع ہیں بتایا گیا ہے کہ سابق وفاقی وزیر میاں فرح حبیب،ایم پی اے وارث عزیز سمیت ایک کے ساتھیوں نے بیرون ملک فرار ہونے کی تیاریاں مکمل کرلی ہیں وہ کسی بھی وقت پاکستان سے فرار ہوسکتے ہیں یہ امر قابل ذکر ہے کہ پی ٹی آئی کے منحرف اراکین اسمبلی عاصم نذیر, نواب شیروسیر اور راجہ ریاض احمد کے حلقوں میں ہونے والا ترقیاتی کاموں اور مختلف محکموں میں ہونے والی بھرتیوں کے بارے میں بھی تحقیقات کی جاری ہیں

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں