معاشی عدم استحکام اور ڈالر کی اونچی اڑان سے بزنس کمیونٹی کی پریشانیوں میں اضافہ، حاجی اصغر

فیصل آبا د (ملک شفیق سے)

فیصل آباد چیمبر آف کامرس اینڈ انڈسٹری کی سٹینڈنگ کمیٹی برائے یوزڈ مشینری کے چیئرمین انجمن تاجران سٹی فیصل آباد کے نائب صدر حاجی محمد اصغر نے کہاہے کہ ملکی معیشت عدم استحکام اور ڈالر کی اونچی اڑان نے بزنس کمیونٹی کی پریشانیوں میں اضافہ ہورہا ہے، ڈالر کی قیمت میں اضافہ سے پاکستان پرغیرملکی قرضوں میں اربوں روپے کا اضافہ ہورہا ہے جو تشویش ناک اور ملکی معیشت بھی بری طرح متاثر ہورہی ہے کوئی ملک بھی ٹیکس کے بغیر ترقی نہیں کر سکتا اس لئے تمام تاجر اپنے اپنے حصے کا ٹیکس ضرور دیں تاکہ ملک میں خوشحالی آ سکے۔

انہوں نے تاریخ کے خطرناک ترین معاشی بحران پر تشویش کا اظہار کرتے ہوئے کہا کہ روپے کی قدر میں کمی اور ڈالر کی انتہائی اونچی اڑان سے روز بروز تجارتی خسارہ بڑھ رہا ہے انہوں نے اسٹیٹ بینک آف پاکستان روپے کی قیمت میں استحکام اور ڈالر کی بڑھتی ہوئی قیمت کو کنٹرول کرنے کیلئے موثر حکمت عملی اختیار کی جا ئے انہوں نے کہا ہے کہ ڈالر کی اڑان نے پاکستانی روپیہ کی قدر کو مٹی میں ملا دیا ہے‘ ڈالر200 روپے کا ہونے سے ایک ماہ میں پاکستانی قرضوں میں 16 سو ارب روپے کا اضافہ انتہائی تشویشناک ہے‘ حکمران کی ساری توجہ اپنی سزائیں اور کیس ختم کرانے پر لگی ہوئی ہیں‘ ملکی معیشت کا دیوالیہ نکل چکا ہے‘ انہوں نے کہا ہے کہ جب تک حکومت کے ہاتھ سے کشکول نہیں گرے گا اس وقت تک پاکستان اور پاکستان تاجر خوشحال نہیں ہوں گے‘ سالانہ اربوں روپے کا ٹیکس اکٹھا کرنے کے باوجود اشرافیہ کی عیاشیوں پر اٹھنے والے اخراجات کو کم کئے بغیر باوقار پاکستان کا قیام عمل میں آنا مشکل ہے‘ انہوں نے کہا کہ پاکستان کے اداروں میں کرپشن اپنی آخری حدوں کو چھو رہی ہے جائز کام کیلئے بھی رشوت کا بازار گرم ہے‘مقررین نے کہا کہ اگر حکمران پاکستان اور پاکستانی عوام کو خوشحال دیکھنا چاہتے ہیں تو سرکاری اداروں سے رشوت اور سفارش کا کلچر ختم کریں، 600 ارب کا بجٹ خسارہ لحہ فکریہ ہے، ملک میں جاری سیاسی و معاشی عدم استحکام، ڈالر کی اونچی اڑان نے بزنس کمیونٹی کی نیند یں اڑا دیں، پوائنٹ سکوزرنگ کی بجائے ملکی حالات کو سنجیدگی سے لیتے ہو ئے اقدامات اٹھانے کی ضرورت ہے۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں